بھارت میں انتہا پسند ہندو نے مسلمان مزدور کو کلہاڑی سے مارنے کے بعد آگ لگادی

ویب ڈیسک  جمعرات 7 دسمبر 2017
مسلم مزدور کومارنے والے شمبولال اوراس کے بھتیجے کو گرفتار کرلیا،پولیس فوٹو:فائل

مسلم مزدور کومارنے والے شمبولال اوراس کے بھتیجے کو گرفتار کرلیا،پولیس فوٹو:فائل

بھارتی ریاست راجستھان میں انتہاپسند ہندو نے مسلمان مزدور کو بے دردی سے مارنے کے بعد پیٹرول چھڑک کر آگ لگادی۔

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق ریاست راجستھان میں انتہاپسند ہندو نے مغربی بنگال سے تعلق رکھنے والے 45 سالہ مسلمان مزدور محمد افرازل کو پہلے کلہاڑی کے ساتھ بے دردی سے مارا، اس دوران وہ مدد کے لیے پکارتا رہا لیکن انتہاپسند ہندو نے اسے لہولہان کرنے کے بعد پیٹرول چھڑک کر آگ لگادی۔

دوسری جانب ملزم کے بھتیجے نے  پورے واقعے کی ویڈیو بھی بنائی جسے بعد میں سوشل میڈیا پر وائرل کردیا گیا، ویڈیو میں ملزم شمبو لال نے مسلمانوں کو خبردار کیا کہ بھارت میں ’لو جہاد‘ کو روکا جائے ورنہ سب کا ایسا ہی حال ہوگا جب کہ اس نے کہا کہ میں نے ’لو جہاد‘ کے نام پر اپنی ہندو خاتون کو مسلمان ہونے سے بچالیا۔

پولیس نے شمبو لال اور اس کے 14 سالہ بھتیجے کو گرفتار کرلیا جب کہ راجستھان کے ڈائریکٹر جنرل آف پولیس نے واقعے کو ظالمانہ اقدام قرار دیتے ہوئے کہا کہ کوئی عام شخص ایسی حرکت نہیں کرسکتا تاہم پورے واقعے کی تحقیقات کے لیے ٹیم تشکیل دے دی ہے۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔