برطانوی حکومت آج اپنی ’’نئی امیگریشن پالیسی‘‘ کا اعلان کرے گی

ویب ڈیسک  پير 25 مارچ 2013
پالیسی کے تحت غیرقانونی طور پر برطانیہ آنے والے افراد کو نوکریاں یا رہائش فراہم کرنے والوں پرعائد جرمانہ بھی دوگنا کردیا گیا ہے۔ فوٹو: رائٹرز

پالیسی کے تحت غیرقانونی طور پر برطانیہ آنے والے افراد کو نوکریاں یا رہائش فراہم کرنے والوں پرعائد جرمانہ بھی دوگنا کردیا گیا ہے۔ فوٹو: رائٹرز

لندن: برطانوی حکومت غیر قانونی تارکین وطن کی آمد کو روکنے کے لئے نئی امیگریشن پالیسی کا اعلان آج کرے گی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق مجوزہ امیگریشن پالیسی کے تحت نئے تارکین وطن کو شہریت کے لیے 5سال تک انتظارکرنا پڑے گا انہیں 6 ماہ تک بےروزگاری الاؤنس دیا جائے گا تاہم اس کے بعد نوکری نہ ملنے کی صورت میں وہ اس الاؤنس کےاہل نہیں ہوں گے، پالیسی میں غیرقانونی طور پر برطانیہ آنے والے افراد کو نوکریاں یا رہائش فراہم کرنے والوں پر جرمانہ بھی دوگنا کرنے کی تجویز پیش کی گئی ہے۔

تارکین وطن کو نوکری یا رہائش حاصل کرنے کےلئے ٹیسٹ کو مزید سخت کر دیا گیا ہے جس کے ذریعے تارکین وطن کے بارے میں صحیح  معلومات حاصل کی جا سکیں گی، جب کہ اس پالیسی کے تحت تارکین وطن کےلئے ویزہ لینے سے قبل صحت کا بیمہ کرانا لازمی قرار دیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ نئی امیگریشن پالیسی کا مقصد غیر قانونی تارکین وطن کی آمد میں کمی اور ان سے ملکی خزانے میں پڑنے والے بوجھ کو ختم کرنا ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔