عدلیہ مخالف تقاریر پر نواز شریف اور مریم نواز کو نوٹس جاری

ویب ڈیسک  منگل 13 مارچ 2018
نواز شریف اور مریم نواز عوام کو عدلیہ کے خلاف اکسانے سے باز نہیں آ رہے، درخواست گزار۔ فوٹو : فائل

نواز شریف اور مریم نواز عوام کو عدلیہ کے خلاف اکسانے سے باز نہیں آ رہے، درخواست گزار۔ فوٹو : فائل

 لاہور: ہائی کورٹ نےعدلیہ مخالف تقاریر پر سابق وزیراعظم نواز شریف اور مریم نواز کو نوٹس جاری کردیا۔

لاہور ہائی کورٹ میں سابق وزیراعظم نواز شریف اور صاحبزادی مریم نواز کے خلاف درخواست دائر کی گئی تھی جس میں موقف اپنایا گیا کہ نواز شریف اور مریم نواز عوام کو عدلیہ کے خلاف اکسانے سے باز نہیں آ رہے، مریم نواز جلسوں اور سوشل میڈیا پرعدلیہ کو تضحیک کا نشانہ بنارہی ہیں جب کہ نواز شریف نے عدلیہ کے خلاف بغاوت کا اعلان کرکے عوام کو اکسایا ہے۔ عدلیہ مخالف تقاریر نشر کرنے سے روکنے پر پیمرا بھی کچھ نہیں کر رہا جب کہ لیگی شخصیات کی عدلیہ مخالف تقاریر کا ریکارڈ بھی جمع کرا دیا ہے۔

عدالت نے درخواست گزار کا موقف سننے کے بعد نواز شریف، مریم نواز اور پیمرا سے 15 مارچ تک جواب طلب کر لیا جب کہ سیکرٹری پیمرا کو بهی مرکزی کیس میں فریق بنانے کی اجازت دے دی ہے۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔