عراقی وزیراعظم کے سیکیورٹی انچارج کو قتل کردیا گیا

ویب ڈیسک  بدھ 14 مارچ 2018
عسکریت پسندوں کے حملے میں شریف اسماعیل موقع پر ہی ہلاک جبکہ ان کے تین محافظ زخمی ہوگئے فوٹو:فائل

عسکریت پسندوں کے حملے میں شریف اسماعیل موقع پر ہی ہلاک جبکہ ان کے تین محافظ زخمی ہوگئے فوٹو:فائل

 بغداد: عراقی وزیراعظم حیدر العبادی کے سیکیورٹی انچارج جنرل شریف اسماعیل کو قتل کردیا گیا۔

بین الاقوامی خبر رساں ایجنسی کے مطابق اسپیشل فورس کے کمانڈر اور وزیراعظم حیدر العبادی کے سیکیورٹی انچارج شریف اسماعیل کو بغداد واپس آتے ہوئے عسکریت پسندوں نے حملہ کرکے ہلاک کردیا، کمانڈر شریف اسماعیل وزیراعظم کے دورے کے حفاظتی انتظامات کو مکمل کرنے کے لیے صوبے نینوا گئے تھے جہاں سے واپسی کے دوران عسکریت پسندوں نے انہیں قتل کر دیا۔

سیکیورٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ نینوا کے علیحدگی پسند جنگجوؤں کے گروپ نے ایک چیک پوسٹ پر  اُس وقت حملہ کردیا جب جنرل شریف اسماعیل وزیراعظم کے دورے کے دوران سیکیورٹی انتظامات کو آخری شکل دینے کے لیے وہاں ٹہرے تھے، عسکریت پسندوں کے حملوں میں شریف اسماعیل موقع پر ہی ہلاک ہوگئے اور ان کے تین محافظ زخمی ہو گئے ہیں۔

عراقی وزیراعظم حیدر العبادی نے داعش کے خلاف کامیابی کو جواز بنا کر آئندہ انتخابات میں حصہ لینے اور عہدہ برقرار رکھنا کا اعلان کیا ہے، جس کے بعد سے ملک میں سیاسی کشیدگی بڑھ گئی ہے۔ کرد شدت پسندوں اور عراقی فوج کے درمیان جھڑپوں کا سلسلہ بھی جاری ہے۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔