القاعدہ نے شام میں باغیوں کی مدد کا اعتراف کرلیا

مانیٹرنگ ڈیسک / اے ایف پی  بدھ 10 اپريل 2013
عراق میں القاعدہ کی شاخ ’النصرا فرنٹ‘ شامی صدر کی فوج سے لڑائی میں مصروف ہے، البغدادی. فوٹو:فائل

عراق میں القاعدہ کی شاخ ’النصرا فرنٹ‘ شامی صدر کی فوج سے لڑائی میں مصروف ہے، البغدادی. فوٹو:فائل

دمشق / بغداد: عراق میں القاعدہ کی شاخ ’النصرا فرنٹ‘ نے پہلی مرتبہ اس بات کا انکشاف کیا ہے کہ شام کے صدر بشارالاسد کی حکومت کے خلاف لڑنے والا جہادی گروپ ’النصرا فرنٹ‘ ان کے نیٹ ورک کا حصہ ہے اور شام میں اسلامی ریاست کے لیے برسر پیکار ہے۔

یہ بات عراق میں القاعدہ فرنٹ گروپ کے رہنما ابوبکر البغدادی نے اپنے ایک آڈیو پیغام میں بتائی، اس سرگرمی کے بعد دونوں گروپوں کے درمیان روابط کے بارے میں پائے جانے والے شکوک وشبہات کی تصدیق ہوگئی ہے۔ بغدادی نے اپنے آڈیو پیغام میں کہا کہ ‘‘اب وقت ہے کہ دنیا کے سامنے اعتراف کیا جائے کہ النصرا فرنٹ اسلامی ریاست عراق کی شاخ ہے۔’’ اس گروپ کو اب متحد کردیا جائے گا۔

بغدادی نے کہا کہ یہ گروپ دیگر گروپوں کے ساتھ ان شرائط پر اتحاد کا خواہاں ہے کہ ملک اور شہریوں پر حکومت اللہ کے مقرر کردہ قوانین کے مطابق ریاست قائم کی جائیگی۔ النصرا فرنٹ کی شام میں خودکش حملوں سے پہچان ہوئی لیکن بعد میں اس نے ملک میں براہ راست جنگ میں بھی حصہ لینا شروع کیا۔ واشنگٹن نے دسمبر میں عراق میں موجود القاعدہ سے الحاق شدہ اس گروپ کو دہشت گرد تنظیم کا لیبل لگایا تھا۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔