فلسطینی اتھارٹی مشکوک ہوگئی، قبلہ اول خطرے میں ہے،شیخ کمال

 ہفتہ 13 اپريل 2013
 یہودیوں کی آئے روز مداخلت مسجد اقصٰی کو مسلمانوں کیساتھ تقسیم کرنیکی سازش ہے. فوٹو : رائٹرز

یہودیوں کی آئے روز مداخلت مسجد اقصٰی کو مسلمانوں کیساتھ تقسیم کرنیکی سازش ہے. فوٹو : رائٹرز

غزہ: مقبوضہ فلسطین میں سرگرم تحریک اسلامی کے نائب صدر شیخ کمال خطیب نے خبردار کیا ہے کہ مسجد اقصی شدید خطرے میں ہے۔

یہودی آبادکار اور سیکیورٹی فورسز آئے روز مسجد میں گھس کر اس کی بے حرمتی کررہے ہیں۔ دوسری جانب قبلہ اول کے تحفظ میں فلسطینی اتھارٹی کا کردار مشکوک ہے۔ 1948 میں فلسطین کے78 فیصد حصے پر قبضہ کرکے بنائی گئی اسرائیلی ریاست میں تحریک اسلامی کے رہنما نے مرکز اطلاعات فلسطین کے ساتھ اپنی خصوصی بات چیت میں روزانہ کی بنیاد پر یہودیوں کے قبلہ اول پر آئے روزدھاوا بولنے کی کارروائیوں سے خبردار رہنے کی اپیل کی۔انھوں نے کہاکہ مغربی کنارے میں حکمرانی کے مزے لوٹنے والی فلسطینی اتھارٹی کی جانب سے اسرائیلی فوج کے ساتھ سیکیورٹی تعاون سے حالات مزید خراب ہوگئے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ باراک اوباما کے حالیہ دورے کے موقع پر ایک صیہونی تنظیم نے فلسطینی اتھارٹی کو 7ب ہزار بندوقیں دیں جس سے فلسطینی اتھارٹی کی جانب سے اسرائیل کے ساتھ سیکیورٹی تعاون میں اضافے کا بخوبی اندازہ لگایا جا سکتا ہے۔ عرب دنیا اور امت مسلمہ کو مخاطب کرتے ہوئے شیخ کمال خطیب نے کہاکہ اسرائیلی فوج کی حفاظت میں یہودیوں کی جانب سے مسجد اقصٰی میں گھس کر عبادات کی ادائیگی دراصل اس مسجد کو زمانی اور مکانی اعتبار سے مسلمانوں اور یہودیوں کے درمیان تقسیم کرنے کی سازش کا حصہ ہے۔شیخ کمال خطیب نے کہا کہ امریکی صدر باراک اوباما کے حالیہ دورے کے بعد اسرائیل نے اپنے اس ناپاک منصوبے پر کام مزید تیز کردیا ہے جس کے خلاف امت مسلمہ کو فوری کارروائی کرنا ہوگی۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔