چیف جسٹس کا سانحہ اے پی ایس کی تحقیقات کیلیے جوڈیشل کمیشن بنانے کا حکم

ویب ڈیسک  بدھ 9 مئ 2018
2دو ماہ میں انکوائری رپورٹ جمع کرائی جائے،چیف جسٹس کی ہدایت ،فوٹو:فائل

2دو ماہ میں انکوائری رپورٹ جمع کرائی جائے،چیف جسٹس کی ہدایت ،فوٹو:فائل

پشاور: چیف جسٹس آف پاکستان نے سانحہ آرمی پبلک اسکول پشاور کی تحقیقات کے لیے جوڈیشل کمیشن بنانے کا حکم دے دیا۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق سپریم کورٹ پشاور رجسٹری میں چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے  سماعت کے دوران سانحہ اے پی ایس کی تحقیقات کے لیے جوڈیشل کمیشن بنانے کا حکم دیا۔

چیف جسٹس نے پشاور ہائی کورٹ کے چیف جسٹس کو جوڈیشل کمیشن بنانے کا حکم دیتے ہوئے 2 ماہ میں  انکوائری رپورٹ جمع کرانے کی ہدایت کی جب کہ کمیشن میں کم ازکم پشاور ہائی کورٹ کے ایک جج کو شامل کرنے کی بھی ہدایت کی۔

یہ بھی پڑھیں: سانحہ اے پی ایس؛ چیف جسٹس نے صوبائی اور وفاقی حکومت کو نوٹس جاری کردیا

چیف جسٹس نے گزشتہ دورے کے دوران سانحہ اے پی ایس کیس میں تاخیر کا نوٹس لیتے ہوئے صوبائی حکومت کو نوٹس جاری کیا تھا، چیف جسٹس نے یہ نوٹس سانحے میں شہید ہونے والے بچوں کے لواحقین کے سپریم کورٹ پشاور رجسٹری کے باہر احتجاج پر لیا تھا، مظاہرین کا کہنا تھا کہ انہیں انصاف نہیں دیا جارہا ہے لہذا اعلیٰ عدالتی کمیشن تشکیل دے کر مکمل تحقیقات کرکے انہیں انصاف فراہم کرے۔

واضح  رہے کہ 16 دسمبر 2014 کو پشاور کے آرمی پبلک اسکول پر دہشت گردوں کے حملے میں 130 طلبا سمیت 144 افراد شہید ہو گئے تھے۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔