آصف زرداری کے خلاف ممکنہ کارروائی، پیپلز پارٹی کی حکمت عملی طے

عامر خان  بدھ 11 جولائ 2018
پیپلز پارٹی کی قیادت نے طے کیا ہے کہ انتخابی میدان کسی صورت میں خالی نہیں چھوڑا جائے گا۔ فوٹو: فائل

پیپلز پارٹی کی قیادت نے طے کیا ہے کہ انتخابی میدان کسی صورت میں خالی نہیں چھوڑا جائے گا۔ فوٹو: فائل

کراچی:  پاکستان پیپلز پارٹی نے آصف علی زرداری سمیت دیگر رہنمائوں کے خلاف ہونے والی ممکنہ کارروائی کے سبب پیدا ہونے والی کسی بھی سیاسی صورتحال کا سامنا کرنے کیلیے اہم آپشنز پر مبنی حکمت عملی طے کرلی ہے۔

پاکستان پیپلز پارٹی کی جانب سے بنائی گئی حکمت عملی کے آپشنز میں عدالتوں میں تمام قانونی معاملات کا سامنا کرنا، ہم خیال جماعتوں سے رابطوں کے بعد سیاسی حکمت عملی کو طے کرنا اور ممکنہ کارروائی کی ’’ انتقامی ‘‘ صورت نظر آنے کے بعد احتجاج کرنا شامل ہیں۔

پیپلز پارٹی کی قیادت نے طے کیا ہے کہ انتخابی میدان کسی صورت میں خالی نہیں چھوڑا جائے گا۔ اگر ممکنہ طور پر کسی رہنما کی ’’گرفتاری ‘‘ ہوئی تو پھر بھی عام انتخابات کے بائیکاٹ کا آپشن آخری حد تک استعمال نہیں کیا جائے گا اور اگر ممکنہ طور پر کسی رہنما کی ’’گرفتاری ‘‘ ہوئی تو پھر بھی عام انتخابات کے بائیکاٹ کا آپشن آخری حد تک استعمال نہیں کیا جائے گا ۔یہ مشاورت پیپلز پارٹی کی قیادت نے لاہور میں بلاول ہائوس میں ہونے والے اعلیٰ سطح کے اجلاس میں کی گئی۔

 



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔