عمران خان کو توہین آمیز اشتہار پر نوٹس جاری

نمائندگان ایکسپریس  بدھ 11 جولائ 2018
پیمرا توہین آمیز اشتہارات روکے،الیکشن کمیشن۔ فوٹو:فائل

پیمرا توہین آمیز اشتہارات روکے،الیکشن کمیشن۔ فوٹو:فائل

 راولپنڈی: الیکشن کمیشن نے تحریک انصاف کے اشتہارات میں دوسری سیاسی جماعتوں کیلیے توہین آمیز زبان کے استعمال پر عمران خان کو نوٹس جاری کردیا جبکہ پیمرا کو خط لکھتے ہوئے کسی بھی جماعت کے اس قسم کے اشتہارات روکنے کی ہدایت کر دی ہے۔

الیکشن کمیشن نے اس معاملے پر پیمرا کوخط میں ہدایت کی ہے کہ تمام ٹی وی چینلز کو اس قسم کے الفاظ والے اشتہارات نہ چلانے کی ہدایت کی جائے ۔الیکشن کمیشن نے واضح کیا ہے کہ انتخابات ایکٹ 2017کے تحت پریذائیڈنگ افسران ہی انتخابی نتائج کو مرتب کرنے کے بعد متعلقہ ریٹرننگ افسر اور الیکشن کمیشن کو اس کی ترسیل کا ذمے دار ہیں، اس حوالے سے میڈیا رپورٹس کی سختی سے تردیدکی جاتی ہے کہ سیکیورٹی اہلکاروں کا انتخابی نتائج کی ترسیل میںکسی قسم کا کوئی کردار ہو گا۔

ترجمان کے مطابق سیکیورٹی اہلکاروںکیلیے جاری کردہ ضابطہ اخلاق کے پیرا14کے مطابق ان کا کردار محض اتنا ہے کہ وہ پولنگ اسٹیشن پر پرامن ماحول فراہم کرینگے تاکہ پریذائیڈنگ افسر آسانی کے ساتھ انتخابی نتیجے کی ترسیل امیدواران یا ان کے ایجنٹس کی موجودگی میں کر سکے۔الیکشن کمیشن نے پولنگ اسٹیشن پر فوجی جوانوں کو مجسٹریٹ درجہ اول کے اختیارات دینے کی خبروں کو بھی غلط اور بے بنیاد قرار دیا ہے۔

دریں اثنا پیپلزپارٹی نے اسلام آباد میں پیپلزپارٹی کے امیدوار سبط الحیدر بخاری کے بینرز اور پوسٹر اتارنے پر ضلعی انتظامیہ کیخلاف الیکشن کمیشن میں درخواست دائرکر دی ہے۔

 



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔