نوازشریف اورمریم کی سزا کیخلاف اپیل؛ نیب کوعدالتی معاونت کیلیے افسرمقررکرنے کا حکم

ویب ڈیسک  جمعـء 20 جولائ 2018
اسلام آباد ہائیکورٹ میں نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر کی سزاؤں کے خلاف اپیلوں کی سماعت ہوئی تھی فوٹو: فائل

اسلام آباد ہائیکورٹ میں نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر کی سزاؤں کے خلاف اپیلوں کی سماعت ہوئی تھی فوٹو: فائل

 اسلام آباد: ہائی کورٹ نے نوازشریف، مریم نواز اورکیپٹن (ر) صفدرکی ایون فیلڈ ریفرنس میں سزاؤں کے خلاف اپیلوں پرنیب کوعدالتی معاونت کے لیے افسرمقررکرنے کا حکم دے دیا ہے۔

ایکسپریس نیوزکے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ نے ایون فیلڈ ریفرنس میں نوازشریف،مریم نوازاورکیپٹن صفدر کی سزا کے خلاف اپیلوں کی ابتدائی سماعت کا تحریری حکم نامہ جاری کردیا ہے۔

تحریریہ حکم نامے میں کہا گیا ہے کہ سزاؤں کے خلاف اپیلیں باقاعدہ سماعت کے لیے منظورکرلی گئی ہیں، جس پرنیب کونوٹس جاری کرتے ہوئے جواب بھی طلب کرلیا گیا۔ کیس کی سماعت عدالتی تعطیلات کے بعد ہوگی، وکلاء صفائی کی جانب سے اٹھائے گئے نکات کوزیربحث لانے کی ضرورت ہے، نیب ایون فیلڈ ریفرنس فیصلے پرعدالت کی معاونت کے لیے افسر مقرر کرے۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے اپنے تحریری فیصلے میں کہا ہے کہ نواز شریف کی سزا معطلی کی درخواست پر سماعت جولائی کے آخری ہفتے میں ہوگی، کیس کو سماعت کے لیے جولائی کے آخری ہفتے میں دستیاب بینچ کے سامنے مقرر کیا جائے۔

واضح رہے کہ رواں ہفتے جسٹس محسن اخترکیانی اور جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب پرمشتمل اسلام آباد ہائی کورٹ کے دو رکنی بینچ نے نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر کی ایون فیلڈ ریفرنس میں سزاؤں کے خلاف اپیلوں کی سماعت کی تھی۔

 

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔