300 سے زائد پاکستانی مسافر چین کے کینٹن ایئرپورٹ پر محصور

اسٹاف رپورٹر  پير 23 جولائ 2018
وطن واپسی ممکن بنائی جائے، مسافروں کی آرمی چیف ،چیف جسٹس اور وزیراعظم سے اپیل۔ فوٹو: سوشل میڈیا

وطن واپسی ممکن بنائی جائے، مسافروں کی آرمی چیف ،چیف جسٹس اور وزیراعظم سے اپیل۔ فوٹو: سوشل میڈیا

کراچی: ملکی نجی ایئرلائن شاہین ایئرکے ذریعے وطن واپس آنیوالے 300سے زائد مسافر چین کے کینٹن ایئرپورٹ پر محصور ہوکر رہ گئے۔

ذرائع کے مطابق شاہین ایئر کی چین سے لاہور آنے والی پرواز 3 روز بعد بھی اڑان نہ بھرسکی ،جس کی وجہ واجبات کی عدم ادائیگی کے باعث سول ایوی ایشن اتھارٹی کی جانب سے شاہین ایئر کی سعودی عرب کے علاوہ دیگر تمام ملکوں کیلیے بین الاقوامی پروازوں پر بورڈنگ برجز،نیوی گیشن،جہاز کی ٹیک آف لینڈنگ اور پارکنگ سمیت تمام ترخدمات کی بندش ہیں۔

ذرائع کے مطابق چین کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کینٹن سے شاہین کی پرواز کے ذریعے وطن واپس آنیوالے مسافر ہوٹلوں اورایئرپورٹ کے لائونج میں رات گزار رہے ہیں،محصور مسافروں نے آرمی چیف ،چیف جسٹس اور وزیراعظم سے اپیل ہے کہ ان کی وطن واپسی کو ممکن بنایا جائے۔

ترجمان شاہین ایئرکے مطابق 72 گھنٹے گزرنے کے باوجود سول ایوی ایشن نے شاہین ایئر کی چین سے لاہور پرواز کو اڑنے کی اجازت نہیں دی ،پاکستانی مسافر تاحال چین کے ہوٹل میں محصور ہیں اور اْن کے ویزا کی میعاد ختم ہورہی ہے جن سے انھیں شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

سول ایوی ایشن اس مسئلے پر کسی قسم موقف اختیار کرنے سے قاصر ہے ،ہفتے کو سندھ ہائیکورٹ نے سول ایوی ایشن کو شاہین ایئرکی بیرون ملک پروازوں کو روکنے اور عدالت کے احکام پرعمل نہ کرنے پر توہین عدالت کا نوٹیفکیشن بھی جاری کردیا تھا۔

 

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔