چین میں مسجد کے انہدام کے فیصلے کے خلاف ہزاروں مسلمان سراپا احتجاج

ویب ڈیسک  جمعـء 10 اگست 2018
ہزاروں مسلمانوں نے جامع مسجد کے قریبی اسکوائر پر جمع ہو کر سڑک بلاک کردی۔ فوٹو : چینی میڈیا

ہزاروں مسلمانوں نے جامع مسجد کے قریبی اسکوائر پر جمع ہو کر سڑک بلاک کردی۔ فوٹو : چینی میڈیا

چین کے علاقے نینگشیا میں  جامع مسجد کے انہدام کے فیصلے کے خلاف ہزاروں مسلمان سراپا احتجاج بن گئے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق چین کے خود مختار علاقے نینگشیا کی مقامی حکومت نے جامع مسجد ’ویزہوو‘ کے انہدام کا فیصلہ کیا جس پر ہزاروں مسلمانوں نے جامع مسجد کے قریبی اسکوائر پر جمع ہو کر سڑک بلاک کردی اور حکومت مخالف نعرے لگائے۔

مقامی حکام  نے مظاہرین سے مذاکرات کے کئی دور کیے تاہم مظاہرین نے مسجد کو ہاتھ نہ لگانے کی یقین دہانی تک منتشر ہونے سے انکار کردیا۔

بعد ازاں شہری حکومت کے سربراہ نے وفاقی حکومت سے بات کرنے کے بعد مظاہرین کو تعمیراتی پروجیکٹ کی نئی منصوبہ بندی تک مسجد کے انہدام کے فیصلے کو مؤخر کرنے سے آگاہ کیا جس پر مظاہرین منتشر ہو گئے۔

دوسری جانب حکام کا کہنا ہے کہ مسجد کی تعمیر کے لیے درکار ضروری کاغذی کارروائی عمل میں نہیں لائی گئی  اور نہ ہی اجازت نامہ حاصل کیا گیا اس لیے یہ عمارت غیر قانونی طور پر تعمیر کی گئی ہے اور اسے منہدم کرنا قانون کی پاسداری کرنا ہے۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔