صدر میں تجاوزات کے خلاف آپریشن، ہنگامہ آرائی سے ٹریفک جام

اسٹاف رپورٹر  جمعرات 23 مئ 2013
ایمپریس مارکیٹ کے قریب انسداد تجاوزات کے خلاف کارروائی کے دوران پتھاریدار احتجاج کرتے ہوئے ٹریفک روک رہے ہیں ۔ فوٹو : ایکسپریس

ایمپریس مارکیٹ کے قریب انسداد تجاوزات کے خلاف کارروائی کے دوران پتھاریدار احتجاج کرتے ہوئے ٹریفک روک رہے ہیں ۔ فوٹو : ایکسپریس

کراچی: صدر میں پولیس نے تجاوزات کیخلاف آپریشن کرکے ایمپریس مارکیٹ اور اطراف میں قائم پتھاروں کو ہٹادیا، تجاوزات کے خلاف آپریشن کے دوران پولیس کو شدید مزاحمت کا سامنا کرنا پڑا۔

جبکہ پتھاریداروںنے ہنگامہ آرائی کرکے سڑک پر ٹائر نذر آتش کیے اور ٹریفک پر پتھرائو کیا جس سے متعدد گاڑیوں کے شیشے ٹوٹ گئے، ہنگامہ آرائی کے بعد صدر کے اطراف کے علاقوں میں بدترین ٹریفک جام ہوگیا،مصروف تجارتی علاقے صدر میں پولیس نے تجاوزات کے خلاف آپریشن کیا اس دوران پولیس کی بھاری نفری موجود تھی ، ڈی ایس پی پریڈی ضمیر عباسی نے بتایا کہ پولیس نے آپریشن کے دوران ایمپریس مارکیٹ اور اطراف کے علاقوں میں قائم پتھارے ہٹادیے جس سے سڑک پر ٹریفک کی روانی میں بھی بہتری آئی،اس دوران پولیس کو مزاحمت کا سامنا کرنا پڑا۔

آپریشن کے کچھ دیر بعدپتھاریدار دوبارہ سڑکوں پر نکل آئے اور احتجاج کیا،پتھاریداروں نے پولیس کے خلاف شدید نعرے بازی کی اور ایمپریس مارکیٹ کے سامنے سڑک پر ٹائر نذر آتش کرکے ٹریفک پر پتھرائو کیا جس سے ٹریفک معطل ہوگیا اور کئی مقامات پر ٹریفک جام ہوگیا،کئی گھنٹے تک پولیس اور پتھاریداروں کے درمیان آنکھ مچولی کا بھی سلسلہ جاری رہا،صدر میں ہنگامہ آرائی کے باعث ، ایم اے جناح روڈ ، ریگل چوک ، برنس روڈ ، آئی آئی چندریگر روڈ ، نمائش چورنگی ، پریڈی اسٹریٹ اور نیو پریڈی اسٹریٹ پر گاڑیوں کی طویل قطاریں لگ گئیں،پولیس کی بھاری نفری طلب کرکے پتھاریداروں کو منتشر کیا گیا،پولیس نے متعددپتھاریداروں کو حراست میں لے لیا ہے،بعدازاں ٹریفک پولیس نے ٹریفک بحال کرایا۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔