بیٹے کے قتل میں ملوث پولیس افسر کے خلاف خاتون کا مظاہرہ

نمائندہ ایکسپریس  ہفتہ 25 مئ 2013
تاج بی بی نے الزام عائد کیا خالد مصطفیٰ نے22 اپریل 2009 کو اس کے بیٹے امان اللہ کو جعلی پولیس مقابلے میں ان کے سامنے قتل کردیا.

تاج بی بی نے الزام عائد کیا خالد مصطفیٰ نے22 اپریل 2009 کو اس کے بیٹے امان اللہ کو جعلی پولیس مقابلے میں ان کے سامنے قتل کردیا.

حیدر آباد:  مورو، نوشہرو فیروز کی رہائشی خاتون گل تاج بی بی نے اپنے نوجوان بیٹے امان اللہ بروہی کے قتل میں ملوث پولیس افسر کی عدم گرفتاری کے خلاف حیدرآباد پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا۔

اس موقع پر انھوں نے بتایا کہ ان کا بیٹا امان اللہ اور پولیس افسر خالد مصطفیٰ کورائی بہت اچھے دوست تھے اور خالد مصطفیٰ کورائی ان کے گھر بھی آتا تھا۔ انھوں نے الزام عائد کرتے ہوئے بتایا کہ چند سال قبل خالد مصطفیٰ اور ان کے بیٹے نے مشترکہ کاروبار شروع کیا تھا جس کے لیے خالد مصطفیٰ نے ان کے بیٹے سے کاروبار کے لیے18لاکھ روپے لیے تھے۔

انھوں نے بتایا کہ کاروبار میں ہونے والے منافع اور ادھار کی رقم کے تقاضے پر خالد مصطفیٰ اس کے بیٹے امان اللہ کا دشمن ہوگیا اور اسے جان سے مارنے کی دھمکیاں دینے لگا۔ انھوں نے الزام عائد کیا خالد مصطفیٰ نے22 اپریل 2009 کو اس کے بیٹے امان اللہ کو جعلی پولیس مقابلے میں ان کے سامنے قتل کردیا جس کے خلاف عدالت میں کیس زیر سماعت ہے۔

لیکن خالد مصطفیٰ اپنے ساتھیوں کے ذریعے انھیں کیس ختم نہ کرنے کی صورت میں جان سے مارنے کی دھمکیاں دے رہا ہے۔ انھوں نے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا کہ خالد مصطفیٰ کورائی کو گرفتار کرکے انصاف و تحفظ فراہم کیا جائے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔