دنیا کے سب سے بڑے تھری ڈی پرنٹر سے فوجی بیرک کی تعمیر

ویب ڈیسک  بدھ 12 ستمبر 2018
امریکی میرین کور سسٹم کمانڈ نے ایک بڑے تھری ڈی پرنٹر کے ذریعے 40 گھنٹوں میں کنکریٹ کی فوجی بیرک بنادی (فوٹو: ایم سی ایس سی)

امریکی میرین کور سسٹم کمانڈ نے ایک بڑے تھری ڈی پرنٹر کے ذریعے 40 گھنٹوں میں کنکریٹ کی فوجی بیرک بنادی (فوٹو: ایم سی ایس سی)

الینوئے: کسی بھی فوج کو آپریشن کے دوران فوری سکونت کےلیے بیرک نما جگہ درکار ہوتی ہے اور تھری ڈی پرنٹر سے ’’کم خرچ بالا نشین‘‘ کے تحت قلیل وقت میں فوجی بیرک بنا کر سپاہیوں کی مدد کی جاسکتی ہے۔ عسکری بیرک کا یہ نمونہ امریکی ریاست الینوئے کے شہر شیمپین میں بنایا گیا ہے۔

ایم سی ایس سی نے عسکری انجینئر کی مدد سے یہ بیرک بنائی ہے۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ اگر لکڑی سے یہ بیرک بنائی جائے تو اس کے لیے 10 فوجیوں کو مسلسل پانچ دن تک کام کرنا پڑتا تھا جبکہ روبوٹ نے یہ کام صرف دو روز میں مکمل کیا اور ایک کنکریٹ بیرک تیار کرلی۔

اس بڑے تھری ڈی پرنٹر کے نلکی نما نوزل سے سیمنٹ خارج ہوتا ہے اور متحرک پلیٹ فارم سے ہموار انداز میں دیواریں بنائی جاتی ہیں تاہم کھڑکیاں اور چھت فوجی انجینئرز کو خود بنانا پڑیں گی۔ اس طرح کم افرادی قوت کے ساتھ مؤثر انداز میں بیرک، مکانات اور دفاتر تعمیر کیے جاسکتے ہیں۔

فوجی بیرک کے علاوہ تھری ڈی پرنٹر قدرتی آفات اور حادثات کی صورت میں فوری طور پر کم خرچ مکانات کی تعمیر میں استعمال کیے جاسکتے ہیں۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔