ڈیجیٹل میٹرز کیخلاف درخواست پر کے الیکٹرک سے جواب طلب

اسٹاف رپورٹر  ہفتہ 15 ستمبر 2018
کے الیکٹرک نے چند ماہ قبل77ارب روپے کی اوور بلنگ کی،میگا کرپشن کی تحقیقات نیب کے سپرد کی جائے، وکیل۔ فوٹو: فائل

کے الیکٹرک نے چند ماہ قبل77ارب روپے کی اوور بلنگ کی،میگا کرپشن کی تحقیقات نیب کے سپرد کی جائے، وکیل۔ فوٹو: فائل

 کراچی:  سندھ ہائی کورٹ نے ڈیجیٹل اسمارٹ میٹرز کے ذریعے اضافی بل وصول کرنے سے متعلق درخواست پر کے الیکٹرک حکام کو جواب کے لیے 4 ہفتوں کی مہلت دیدی۔

سندھ ہائی کورٹ میں دو رکنی بینچ کے روبرو ڈیجیٹل اسمارٹ میٹرز کے ذریعے اضافی بل وصول کرنے پر کے الیکٹرک کے خلاف درخواست کی سماعت ہوئی، نیپرا کی جانب سے  جمع جواب میں کہا گیا کہ بجلی کے اضافی یونٹ کے خلاف درخواست گزار کی شکایت موصول ہوئی تھی، درخواست گزار کی شکایت پر کے الیکٹرک  سے وضاحت مانگی گئی تھی، کے الیکٹرک نے کہا کہ درخواست گزار کی شکایت کا ازالہ کردیا ہے۔

درخواست گزار کے وکیل نے در محمد شاہ نے موقف اختیار کیاکہ نیپرا کا جواب گمراہ کن ہے کے الیکٹرک کے ڈیجیٹل میٹرز سم کے ذریعے ہیڈ کوارٹر سے کنٹرول ہوتے ہیں، موبائل فون اور ریموٹ کنٹرول کے ذریعے یونٹس کو بڑھا دیا جاتا ہے، چینی کمپنی سے درآمد شدہ میٹرز سافٹ ویئر کے ذریعے کنٹرول کیے جاتے ہیں، کے الیکٹرک نے چند ماہ قبل 77 ارب روپے کی اوور بلنگ کی ہے، میگا کرپشن کی تحقیقات نیب کے سپرد کی جائے،کراچی سے ڈیجیٹل میٹرز فوری نکالنے کا حکم دیا جائے۔

عدالت نے کے الیکٹرک کو جواب کیلیے 4 ہفتے کی مہلت دیتے ہوئے سماعت ملتوی کر دی۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔