نیب کا جھوٹی شکایات درج کرانے والوں کے خلاف کارروائی کا فیصلہ

ویب ڈیسک  جمعـء 9 نومبر 2018
جھوٹی درخواستیں دینے والوں کو ایک سال قید اور جرمانہ کیا جائے گا، ترجمان نیب

جھوٹی درخواستیں دینے والوں کو ایک سال قید اور جرمانہ کیا جائے گا، ترجمان نیب

لاہور: نیب نے جھوٹی اور فرضی شکایات درج کرانے والوں کے خلاف کارروائی کا فیصلہ کیا ہے۔ 

ایکسپریس نیوز کے مطابق چئیرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال کی ہدایت پر نیب نے جھوٹی اور فرضی شکایات دینے والوں کے خلاف کارروائی کا فیصلہ کیا ہے جب کہ جھوٹی اور جعلی درخواستیں دینے والوں کو ایک سال قید، جرمانہ یا دونوں سزائیں دی جا سکیں گی۔

ترجمان نیب کے مطابق یہ فیصلہ فرضی درخواستوں کی حوصلہ شکنی اور افسران سے اضافی بوجھ ختم کرنے کے لیے کیا گیا ہے، شکایت کنندہ کو  مکمل ثبوتوں کے ساتھ بیان حلفی جمع کرانا ہوگا جب کہ دو ماہ تک تحریری شکایات کی جانچ پڑتال کرنے کے بعد کارروائی کا آغاز کیا جائے گا اورشکایت درست ثابت ہونے پر 4 ماہ کے اندر اندر انکوائری کا عمل مکمل کیا جائے گا۔

ترجمان نیب نے کہا کہ شکایت کنندہ کو شکایت کا ڈائری نمبر دیا جائے گا جو دو ماہ بعد ٹریک کیا جاسکے گا جس سے شکایت کنندہ کو پتہ چل سکے کہ انکوئری کس مرحلے میں ہے۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔