ڈی جی نیب لاہور کے خلاف جعلی ڈگری کیس کی سماعت موخر

ویب ڈیسک  ہفتہ 10 نومبر 2018
شہزاد سلیم کی جعلی ڈگری سے متعلق کیس 12 نومبر کو سماعت کے لیے مقرر کیا گیا تھا فوٹو:فائل

شہزاد سلیم کی جعلی ڈگری سے متعلق کیس 12 نومبر کو سماعت کے لیے مقرر کیا گیا تھا فوٹو:فائل

 اسلام آباد: سپریم کورٹ نے ڈی جی نیب لاہور شہزاد سلیم کی مبینہ جعلی ڈگری سے متعلق کیس کی سماعت موخر کردی ہے۔

سپریم کورٹ نے قومی احتساب بیورو (نیب) لاہور کے ڈائریکٹر جنرل شہزاد سلیم کی جعلی ڈگری سے متعلق کیس 12 نومبر کو سماعت کے لیے مقرر کیا تھا اور چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے اس کی سماعت کرنی تھی۔ تاہم اب یہ کیس ڈی لسٹ کر دیا گیا ہے۔ رجسٹرار سپریم کورٹ نے درخواست گزار اسد کھرل کو جاری کردہ سماعت میں پیش ہونے کا نوٹس بھی واپس لے لیا ہے۔

یہ پڑھیں: نیب لاہور اپنے ڈی جی کے دفاع میں میدان میں آ گیا

گزشتہ سال 26 اکتوبر کو ڈی جی نیب لاہور شہزاد سلیم کی تعیناتی مبینہ جعلی ڈگری پر ہونے کا انکشاف ہوا تھا جس پر سپریم کورٹ میں نیب میں غیرقانونی بھرتیوں سے متعلق ازخود نوٹس کی سماعت ہوئی تھی۔

یہ پڑھیں : ڈی جی نیب لاہور کی تعیناتی جعلی ڈگری پر ہونے کا انکشاف

سماعت میں درخواست گزار نے ڈی جی نیب کی تعیناتی سے متعلق انکشاف کرتے ہوئے مؤقف پیش کیا تھا کہ شہزاد سلیم کی ڈگری کیلبری فونٹ میں لکھی گئی ہے جب کہ کیلبری 2007 میں آیا اور ڈگری 2002 کی ہے۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔