ٹنڈو باگو کے نواحی گائوں میں جلدی بیماری سے 2 بچے جاں بحق

نامہ نگار  پير 1 جولائ 2013
گائوں خلیل ملاح میں 13 سالہ نسرین کے جسم میں کیڑے پڑ گئے، ڈیڑھ سالہ حنا اور 8 سالہ آمنہ چلنے پھرنے سے معذور۔ فوٹو: فائل

گائوں خلیل ملاح میں 13 سالہ نسرین کے جسم میں کیڑے پڑ گئے، ڈیڑھ سالہ حنا اور 8 سالہ آمنہ چلنے پھرنے سے معذور۔ فوٹو: فائل

ٹنڈو باگو: ٹنڈو باگو، نواحی گائوں خلیل ملاح میں 2 غریب خاندان کے بچوں کو جلد کی لا علاج بیماری، 2 بچے جلد  جاں بحق، 3 بچیاں انتہائی تشویشناک حالت میں گھر کے اندر بستر سے لگ گئیں اور موت و زیست کی کشمکش میں مبتلا ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ٹنڈو باگو کے نواحی گائوں خلیل ملاح کے رہائشی 2 محنت کش محمد ملاح اور عثمان ملاح کے بچوں کو ہونے والی جلد کی پر اسرار بیماری میں دونوں خاندان کے 2 بچے اس بیماری سے جاں بحق ہوگئے ہیں جبکہ مزید 3 بچے اس بیماری میں مبتلا ہیں، نسرین ملاح انتہائی تشویشناک حالت میں موت کا انتظار کررہی ہیں، اس کے پورے جسم میں کیڑے پڑ گئے ہیں اور وہ سخت عذاب کی زندگی گزارنے پر مجبور ہے، جلد کی بیماری سے متاثرہ دوسرے خاندان محمد ملاح کی 2 بیٹیاں 8 سالہ آمنہ اور ڈیڑھ سالہ حنا بھی بیماری کے باعث چلنے پھرنے سے معذور بن چکی ہیں۔ بچیوں کے جسم سے خون اور پیپ رس رہے ہیں۔

والدین کے مطابق ڈاکٹر و سرجن اب تک مرض کی تشخیص ہی نہیں کرسکے ہیں اور ڈاکٹروں نے اب انھیں کراچی سے علاج کا مشورہ دیا ہے اور بتایا کہ علاج پر 8 سے 10لاکھ روپے کے اخراجات آئیں گے۔ نسرین کی والد بصیرہ نے بتایا کہ بیماری کے با عث ان کے 2 بیٹے پہلے ہی فوت ہوچکے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ انھوں نے علاج کے سلسلے میں حکومتی اداروں نے کسی بھی قسم کی مدد نہیں کی۔ متاثرہ دونوں خاندانوں نے مخیر حضرات سے اپیل کی ہے کہ ان کے بچوں کی زندگی بچانے کے لیے ان کی مدد کی جائے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔