سہون، کوچ نے کار کو کچل دیا، کراچی کے 8 افراد جاں بحق

نمائندہ ایکسپریس  پير 1 جولائ 2013
تحریک منہاج القرآن کے رہنما اپنے اہل خانہ کے ہمراہ عرس میں شرکت کے بعد واپس آرہے تھے کہ تیز رفتار بس نے ٹکر ماردی  فوٹو: ایکسپریس نیوز

تحریک منہاج القرآن کے رہنما اپنے اہل خانہ کے ہمراہ عرس میں شرکت کے بعد واپس آرہے تھے کہ تیز رفتار بس نے ٹکر ماردی فوٹو: ایکسپریس نیوز

سیہون: سیہون کے قریب حضرت لال شہباز قلندر کے عرس میں شرکت کے بعد واپس جانے والی زائرین کی کار کو حادثے میں تحریک منہاج القرآن ضلع وسطی کراچی کے نائب ناظم، ان کی اہلیہ اور 3 بچوں سمیت ایک ہی خاندان کے 8 افراد جاں بحق ہو گئے اور 3افراد زخمی ہوئے ہیں۔

حادثے کے عینی شاہد اور سن تھانے کے ہیڈ منشی کے مطابق سن کے قریب انڈس ہائی وے شالمانی اسٹاپ پر تیز رفتار بس سامنے سے حضرت لال شہباز قلندر کے عرس میں شرکت کے بعد واپس جانے والی کار سے ٹکرا گئی۔ جاں بحق ہونے والوں تحریک منہاج القرآن ڈسٹرکٹ سینٹرل کراچی کے نائب ناظم رضوان قریشی، ان کی اہلیہ قراۃ العین، ان کے بچے 6 سالہ حبیبہ، 4 سالہ ہانیہ، ڈیڑھ سالہ حسین، خواہر نسبتی منیزہ، اس کا بیٹا ڈیڑھ سالہ محمد حسین اور رضوان قریشی کے دوست طاہر شامل ہیں۔ حادثے میں کار ڈرائیور محمد اسلم کھوکھر، رضوان قریشی کی بیٹی دانیہ اور منیزہ کی بیٹی زینب زخمی ہوئے۔ اطلاع ملتے ہی ایس ایچ او سہون عرفان علی بھٹی جائے وقوعہ پہنچ گئے، حیدرآباد سے ایدھی سینٹر حیدرآباد کے انچارج معراج بھی جائے حادثہ پہنچے۔

لاشیں ایدھی ایمبولینس کے ذریعے سن کے اسپتال اور زخمیوں کو سول اسپتال جامشورو منتقل کیا گیا۔ پولیس کے مطابق جامشورو سے سے سہون جانے والی 2 بسیں نمبر C 2757 اور JB 3986 ایک دوسرے کو اوور ٹیک کر رہی تھیں، اسی دوران ایک بس سامنے سے آنے والی کار نمبر AWG 476 سے ٹکرا گئی۔ حادثے کے بعد ڈرائیور بس لے کر موقع سے فرار ہو گیا۔ دوسری جانب حادثے میں جاں بحق رضوان قریشی کے قریبی دوست اور تحریک منہاج القرآن کے رہنما رانا محمد اسلم کے مطابق جاں بحق افراد کراچی کے علاقے اورنگی ٹاون سیکٹر ایل ایٹ کے رہائشی تھے جوہفتے کی شب درگاہ لال شہباز قلندر گئے تھے اور مزار پر حاضری کے بعد واپس کراچی جا رہے تھے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔