81 افراد کو موت کی نیند سلانے والا روس کا سب بڑا سیریل کلر

ویب ڈیسک  منگل 11 دسمبر 2018
میخائل پوپکوف کو 22 خواتین کے قتل کے الزام میں پہلے ہی عمر قید کی سزا سنائی جا چکی ہے (فوٹو:فائل)

میخائل پوپکوف کو 22 خواتین کے قتل کے الزام میں پہلے ہی عمر قید کی سزا سنائی جا چکی ہے (فوٹو:فائل)

ماسکو: روسی تاریخ کے سب سے بڑے سیریل کلر میخائل پوپکوف نے 22 خواتین سمیت 81 افراد کو موت کی نیند سلانے کا اعتراف کرلیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق 81 افراد کو بے موت مارنے والے روس کے سب سے بڑے قاتل کو ایک بار پھر عمر قید کی سزا سنائی گئی ہے۔

روسی پراسیکیوٹر جنرل کے مطابق ملک کا سب سے بڑا قاتل سابق پولیس اہلکار ہے جس کا نام میخائل پوپکوف ہے، سابق پولیس اہلکار کو 22 خواتین کے قتل کے جرم میں پہلے بھی عمر قید کی سزا سنائی جا چکی ہے تاہم قاتل نے 1992ء سے 2007ء کے درمیان 59 مزید افراد کو قتل کرنے کا اعتراف کیا ہے اور اسے دوبارہ عمر قید کی سزا سنائی گئی ہے۔

میخائل پوپکوف نے 81 افراد کا قتل کرکے اپنے ہی ملک  کے 2 سفاک قاتلوں کا ریکارڈ بھی توڑ دیا ہے، آندرے چیکاتیلو نے بچوں سمیت 53 افراد کو موت کے گھاٹ اتارا تھا اور اسے موت کی سزا دی گئی تھی جب کہ 2007ء میں ایک اور قاتل ایلگزینڈر کو ماسکو میں 48 افراد کو قتل کرنے پر عمر قید کی سزا دی گئی تھی۔

قاتل پوپکوف نے اپنے اعترافی بیان میں بتایا کہ وہ اپنی ملازمت کے دور میں خواتین کو رات کے اوقات میں سیرو تفریح کے لیے بلاتا اور پھر روس کے شہر انگارسک میں پولیس کی گاڑی میں ہی انہیں قتل کردیتا تھا، بعض جرائم کی تحقیقات میں خود بھی حصہ لیا تاکہ خود پر ہونے والے شکوک و شبہات سے بچا جاسکے،  قاتل نے بتایا کہ اس نے 10 خواتین کی آبروریزی بھی کی۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔