ماڑی پور روڈ بند ہونے سے یومیہ ایک ارب کا نقصان ہوتا ہے

اسٹاف رپورٹر  ہفتہ 6 جولائ 2013
سڑک پر احتجاج نہ روکا گیاتو کاروبار بند کردیں گے،صدر گڈز ٹرانسپورٹرز ایسوسی ایشن. فوٹو: ایکسپریس

سڑک پر احتجاج نہ روکا گیاتو کاروبار بند کردیں گے،صدر گڈز ٹرانسپورٹرز ایسوسی ایشن. فوٹو: ایکسپریس

کراچی: شہر کی اہم شاہراہ ماڑی پور روڈ پر آئے روز ریلیوں، دھرنوں اور مظاہروں کے باعث گڈز ٹرانسپورٹرز کی نقل و حمل متاثر ہورہی ہے جس کے باعث ملکی ریونیو کو یومیہ ایک ارب روپے کا نقصان برداشت کرنا پڑرہا ہے۔

کراچی گڈز ٹرانسپورٹرز ایسوسی ایشن کے صدر خالد خان نے میڈیا کو بتایا ہے کہ اس شاہراہ سے ملک کے تمام شہروں میں کارگوکی ترسیل ہوتی ہے اور یومیہ کم و بیش5  ہزار ٹرالرز ، ٹرک اور آئل ٹینکرز گزرتے ہیں اورکراچی بندرگاہ سے سامان کی نقل و حمل بھی اسی شاہراہ سے کی جاتی ہے ، انھوں نے کہا کہ اس شاہراہ کے ذریعے یومیہ50 سے 70  ارب روپے کے سامان کی ترسیل کی جاتی ہے تاہم گزشتہ کئی ماہ سے اس شاہراہ پر شروع ہونے والے احتجاج اور دھرنوں کے باعث کارگو کی نقل و حمل کا کام شدید متا ثر ہوا ہے۔

گزشتہ 2روز سے ماڑی پور شاہراہ کئی کئی گھنٹوں تک بند رہنے کے باعث روزانہ20 سے25 ارب روپے کے سامان کی ترسیل کا کام رک گیا ہے اورگڈز ٹرانسپورٹرز کو فیول اور دیگر اخراجات کی مد میں بھاری نقصان اٹھانا پڑرہا ہے، کارگو کو تحفظ فراہم کرنے اور اس شاہراہ پر احتجاجی دھرنوں اور مظاہروں کے حوالے سے گڈز ٹرانسپوٹرز کا اجلاس ( آج ) ہفتہ کو طلب کرلیا گیا اور اس حوالے سے تمام معاملات کا جائزہ لیا جا ئے گا اور اگر اس شاہراہ سے پولیس اور امن و امان کی بحالی کے اداروں نے احتجاج اور دھرنوں کے سلسلے کو بند کرنے کے لیے کوئی خاطر خواہ اقدامات نہ کیے تو ہم احتجاجاً اپنا کاروبار بند کردیں گے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔