سی فوڈ ریستوران میں صارف کے کھانے سے سچا موتی برآمد

ویب ڈیسک  منگل 25 دسمبر 2018
امریکی ریستوران میں کھانے کے دوران صارف لاکھوں روپے کے سچے موتی کا مالک بن گیا (فوٹو: ایم ایس این ویب سائٹ)

امریکی ریستوران میں کھانے کے دوران صارف لاکھوں روپے کے سچے موتی کا مالک بن گیا (فوٹو: ایم ایس این ویب سائٹ)

مین ہٹن: امریکی ریستوران میں سی فوڈ کھانے کے دوران ایک شخص کے منہ میں پتھر محسوس ہوا اس نے اگل کر دیکھا تو معلوم ہوا کہ وہ ایک سچا موتی ہے جس کی قیمت ہزاروں ڈالر ہوسکتی ہے۔

یکم دسمبر کو رِک اینٹوش نامی شخص شہر کے ایک معروف سی فوڈ(سمندری غذا ) کے ریستوران میں لنچ (ظہرانے) کے لیے داخل ہوا اور اس نے صدفے کی ایک پلیٹ کا آرڈر دیا جسے کھاتے ہوئے اس کے منہ میں سچا موتی آگیا۔

پہلے وہ سمجھا کہ یہ دانتوں کی فلِنگ یا کھانے میں کوئی پلاسٹک کا ٹکڑا ہے لیکن اسے ہاتھ میں رکھ کر دیکھا تو وہ مٹر کے برابر ایک موتی تھا اور بالکل گول ہموار موتی پر ایک سیاہ دھبہ بھی موجود تھا۔ ریستوران کے شیف نے تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ یہ سچا موتی ہے اور سیاہ نقطے کی وجہ سے مزید نایاب ہوگیا ہے۔

ریستوران میں 28 سال سے کام کرنے والے باورچی نے بتایا کہ اس کی زندگی میں دومرتبہ ایسا واقعہ ہوا ہے کہ جب سیپیوں کے کیڑے صدفے کھانے کے دوران کوئی موتی برآمد ہوا ہو جواب کھانا آرڈر کرنے والے صارف کی ملکیت ہے۔

دوسری جانب رِک اس موتی کو فروخت کرنے کا کوئی ارادہ نہیں رکھتے اور وہ اسے خوش بختی کی علامت کے طور پر اپنے پاس رکھنا چاہتے ہیں۔

واضح رہے کہ سیپیوں میں سچا موتی بننے کا عمل 10 ہزار میں سے ایک سیپ میں اس وقت ہوتا ہے جب ریت کا کوئی ذرہ سیپ کے اندر چلا جاتا ہے اور خول کے اندر موجود کیڑا اس پر اپنا لعاب ڈال کر اسے سخت گول شکل میں ڈھال دیتا ہے۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔