حوثی باغیوں کا یمنی فوج کی پریڈ پر ڈرون حملہ؛ اعلیٰ ملٹری قیادت زخمی

ویب ڈیسک  جمعرات 10 جنوری 2019
زخمیوں میں یمنی انٹیلی جنس سروس کے سربراہ محمد صالح تاماح بھی شامل ہیں، فوٹو:  قطری میڈیا

زخمیوں میں یمنی انٹیلی جنس سروس کے سربراہ محمد صالح تاماح بھی شامل ہیں، فوٹو: قطری میڈیا

عدن: یمن  میں حوثی باغیوں کے ڈرون حملے میں متعدد یمنی فوج ہلاک جب کہ  چیف آف اسٹاف سمیت کئی سینئر افسران زخمی ہوگئے۔

بین الاقوامی میڈیا رپورٹس کے مطابق حوثی باغیوں نے بندرگاہی شہر عدن میں واقع’العند‘ فوجی اڈے پر جاری پریڈ کو ڈرون سے نشانہ بنایا، حملے کے وقت یمنی حکومتی فوج کی مرکزی قیادت پریڈ دیکھنے کے لیے تقریب میں شریک تھی۔

یہ بھی پڑھیں: یمن میں حکومت اور حوثی باغیوں میں شدید جھڑپیں، ہلاکتیں 149 ہوگئیں

حکام نے حملے میں 7 فوجیوں کی ہلاکت کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا ہے کہ  واقعے میں 20 دیگر فوجی زخمی بھی ہوئے جن میں چیف آف اسٹاف جنرل عبداللہ  النخی،  یمنی انٹیلی جنس سروس کے سربراہ محمد صالح تاماح، سینئر ملٹری کمانڈر محمد جواز اور   لاحیج کے گورنر احمد الترکی بھی شامل ہیں۔

حوثی ترجمان نے دعویٰ کیا  کہ  70 سے 100 کلوگرام دھماکا خیز مواد  ڈرون میں موجود تھا جس نے مرکزی اسٹیج پر یمنی فوجی قیادت کی جاسوسی کے بعد فضا سے ہدف کو کامیابی سے نشانہ بنایا۔

حوثی باغیوں کی تنظیم کے سربراہ عبدالمالک نے اعلان کیا تھا کہ وہ  دشمنوں کے خلاف میزائل اور ڈرون ٹیکنالوجی کا استعمال کریں گے۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔