سعودی ولی عہد محمد بن سلمان دو روزہ دورے پر پاکستان پہنچ گئے

ویب ڈیسک  اتوار 17 فروری 2019
دونوں ممالک کے مابین اربوں ڈاالر کے معاہدے ہوں گے (فوٹو : ٹویٹر)

دونوں ممالک کے مابین اربوں ڈاالر کے معاہدے ہوں گے (فوٹو : ٹویٹر)

سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان دو روزہ تاریخی دورے پر پاکستان پہنچ گئے جہاں نور خان ایئربیس پر  ان کا شاندار استقبال کیا گیا۔

سعودی ولی عہد محمد بن سلمان پاکستان کے دو روزہ دورے پر آج اسلام آباد پہنچے، وزیر اعظم عمران خان، آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ، وفاقی کابینہ کے ارکان اور دیگر حکام نے ان کا استقبال کیا جس کے بعد وہ وزیر اعظم ہاؤس روانہ ہوگئے، وزیر اعظم عمران خان نے سعودی ولی عہد کی گاڑی خود ڈرائیور کی اور برابر میں ولی عہد بیٹھے۔

وزیر اعظم اور ولی عہد وزیر اعظم ہاؤس پہنچے جہاں انہیں گارڈ آف آنر پیش کیا گیا، اس موقع پر وزیراعظم نے اپنی کابینہ کے اراکین کا تعارف سعودی ولی عہد سے کرایا جب کہ ولی عہد نے اپنے وفد میں شامل اراکین کا تعارف وزیراعظم سے کرایا،  سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے یادگاری پودا بھی لگایا۔

سعودی ولی عہد کے طیارے کو پاک فضائیہ کے ایف 16 اور جے ایف 17 تھنڈر طیاروں نے ملکی فضائی حدود میں داخل ہوتے ہی اپنے حصار میں لے لیا تھا اور اسی حصار میں ولی عہد کے طیارے نے راولپنڈی کی نور خان ایئربیس پر لینڈنگ کی۔

سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کی آمد سے قبل سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر اسلام آباد پہنچے، ان کا استقبال وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کیا۔ سعودی وزیر خارجہ سے قبل شاہی ڈاکٹرز،  سیکیورٹی اور دیگر عملے پر مشتمل 221 افراد پہلے ہی پاکستان پہنچ چکے ہیں۔

ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کو 3 لئیرز باکس سیکیورٹی فراہم کی گئی ہے، راولپنڈی نور خان ائیربیس سے وزیراعظم ہاؤس تک باکس سیکیورٹی مشترکہ طور پر کمانڈ پاک فوج اور شاہی گارڈز کے سپرد ہے، فضائی نگرانی کے ساتھ ساتھ بلند عمارتوں پر اہلکار تعینات کیے گئی ہیں۔

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ اور چیئرمین سینیٹ سے ملاقات وزیر اعظم ہاؤس میں ہی ہوگی جب کہ صدر عارف علوی 18 فروری کو سعودی ولی عہد کے اعزاز میں ظہرانہ دیں گے۔ ایوان صدر کے ظہرانے میں سعودی ولی عہد کا 100 رکنی وفد شریک ہوگا، ظہرانے میں وزراء اور اہم شخصیات کو بھی مدعو کیا گیا ہے۔

یہ خبر بھی پڑھیں: امید ہے عمران خان کی قیادت میں پاکستان ترقی کرے گا، سعودی ولی عہد

سعودی ولی عہد ایوان صدر سے ہی واپس ایئرپورٹ روانہ ہوجائیں گے۔ سعودی ولی عہد کی سیکیورٹی کی ذمہ داری ٹرپل ون بریگیڈ کے سپرد ہے، پولیس کے علاوہ ٹرپل ون بریگیڈ اور رینجرز کے متعدد ونگ جبکہ لائٹ کمانڈو بی این کی دو بٹالین اور زرار اینٹی ٹیررسٹ یونٹ کی ایک بٹالین تعینات کی جائے گی۔

یہ خبر بھی پڑھیں: وزیراعظم اورسعودی ولی عہد کی ملاقات، متعدد معاہدوں اور مفاہمتی یادداشتوں پر دستخط

ایس ایل سی ٹو ریڈا دو مختلف مقامات پر نصب کیے جائیں گے، ایوی ایشن کے چھ عدد ایم آئی 17 طیارے فضائی نگرانی کریں گے۔ انٹیلی جنس کی دو بٹالین جبکہ بم ڈسپوزل اسکواڈ کی 28 ٹیمیں کام کریں گی اور ایمبولینسز میڈیکل عملہ سمیت لگ بھگ 12 ہزار افسران و جوان سیکیورٹی ڈیوٹی پر تعینات ہوں گے۔

جڑواں شہروں کی سجاوٹ

سعودی ولی عہد کی آمد کے موقع پر شاہی مہمانوں کو خوش آمدید کہنے کے لیے جڑواں شہروں میں خصوصی انتظامات کیے گئے ہیں، جگہ جگہ تہنیتی بل بورڈز آویزاں ہیں جبکہ وی وی آئی پی روٹ پر پاکستانی اور سعودی پرچموں کی بہار ہے۔ پارلیمنٹ ہاؤس کی عمارت پر شہزادہ محمد بن سلمان کا بڑا پورٹریٹ نصب کیا گیا ہے۔ جس کی لمبائی 120 فٹ اور چوڑائی 45 فٹ ہے۔ پورٹریٹ چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی نے ذاتی خرچے سے تیار کروایا ہے۔

سیکیورٹی انتظامات

سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کے دورہ پاکستان کے موقع پر وفاقی پولیس، سیکیورٹی ڈویژن پولیس، اسپیشل برانچ، رینجرز اور ٹریفک پولیس کے مجموعی طور پر 3 ہزار افسران و اہلکار تعینات ہیں۔ آپریشنل پولیس اور سیکیورٹی ڈویژن پولیس 1200 ، 1200 جب کہ اسپیشل برانچ کے 50 اور اسلام آباد ٹریفک پولیس 250 کے افسران و اہلکار تعینات ہیں۔ علاوہ ازیں باقی رینجرز اور وفاقی پولیس کے گشت اسکواڈز شہر بھر اور ریڈ زون سے ملحقہ علاقوں  میں مسلسل ڈیوٹی انجام دے رہے ہیں۔

خصوصی ٹریفک پلان کے تحت ریڈ زون اوراسلام آباد ایکسپریس وے سمیت دیگر مرکزی شاہراہوں کو سیل کردیا گیا ہے، عوام  کی سہولت کے لیے متبادل راستے فراہم کیے گئے ہیں۔

وزیر اعظم ہاؤس میں کلچرل شو

پاکستان کے دورے پرآنے والے سعودی ولی عہد کے اعزاز میں وزیراعظم ہاؤس میں  کلچرل شو کا اہتمام کیا جائے گا۔ جس میں  چاروں صوبوں کی عکاسی کی جائے گی۔

قومی اسمبلی کا اجلاس ملتوی

سعودی ولی عہد کے دورے کی وجہ سے قومی اسمبلی کے پیر کو ہونے والے اجلاس کا شیڈول تبدیل کردیا گیا ہے۔ ترجمان قومی اسمبلی کے مطابق قومی اسمبلی کا پیر 18 فروری کی شام 4 بجے ہونے والا اجلاس اب بدھ 20 فروری کی شام 4 بجے ہو گا۔ ترجمان کا کہنا ہے کہ محمد بن سلمان کی آمد پر ریڈ زون مکمل سیل کر دیا جائے گا، اسپیکر قومی اسمبلی کی جانب سے قومی سیکرٹریٹ کے ملازمین کو ممکنہ مشکلات کے پیش نظر سوموار کو چھٹی دے دی گئی ہے۔ قومی اسمبلی سیکریٹریٹ کے ملازمین اب منگل کو اپنی ڈیوٹی پر آئیں  گے۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔