خوش خبری

مہ رخ ساجد  جمعـء 24 اگست 2012
جب نیکی اور بھلائی تمہیں مسرور اور شادمان کردے، برائی ناگوار گزرے تو سمجھ لوکہ تم مومن ہو، حدیث نبوی۔ فوٹو: فائل

جب نیکی اور بھلائی تمہیں مسرور اور شادمان کردے، برائی ناگوار گزرے تو سمجھ لوکہ تم مومن ہو، حدیث نبوی۔ فوٹو: فائل

جبیر پور، چکوال: جوں جوں عید قریب آرہی تھی، وقار کی بے چینی بڑھتی جارہی تھی۔ اس نے عید کا پورا پروگرام بنا رکھا تھا کہ یہاں جانا ہے، وہاں جانا ہے۔ کلفٹن، کیماڑی اور منوڑہ کی سیر کرنی ہے، وغیرہ وغیرہ۔ اس نے اپنے دوست زبیر کو بھی اپنا پروگرام بتایا لیکن اُس نے سُنی اَن سُنی کردی۔ دراصل زبیر کا پروگرام کچھ اور تھا جس کی وہ ابھی وقار کو خبر نہیں دینا چاہتا تھا۔

دونوں دوست روزے رکھ رہے تھے۔ دن بھر اپنے اپنے کام کرتے، شام کو گھر آکر روزہ کھولتے، تلاوت کلام پاک کرتے، نماز اور تراویح کا خصوصی اہتمام کرتے۔ زبیر کو تو اعتکاف میں بھی بیٹھنا تھا۔ زبیر جو کچھ کماکر لاتا اس کا کچھ حصہ بچاکر رکھ دیتا۔ اس کے پاس اچھی خاصی رقم جمع ہوچکی تھی۔ پھر اس نے وقار کو اپنا منصوبہ بتایا۔ دراصل اُن کے گائوں میں ایک بہت ہی غریب بیوہ رہتی تھی جو سلائی کڑھائی کرکے اپنا گزارا کرتی تھی۔ خوددار اتنی کہ کسی کے آگے ہاتھ پھیلانا گوارا نہ کرتی تھی۔ اس کے چار بچے تھے۔ زبیر نے جب وقار سے بات کی تو وقار نے برا سا منہ بنالیا۔ یار! ہمارا ٹھیکہ تھوڑی ہے، بچے جانیں، اُن کی ماں جانے۔ زبیر کو وقار کی اس بات سے بہت دُکھ ہوا۔

آج 19رمضان تھا۔ کل زبیر کو اعتکاف میں بیٹھنا تھا۔ اُس نے بچوں کے کپڑے اور کچھ تحفے لے کر اس غریب عورت کا دروازہ کھٹکھٹایا۔ اندر سے آواز آئی، کون؟

اماں! میں زبیر۔۔۔۔ آپ کا پڑوسی۔ زبیر نے جواب دیا۔

بیٹا! اندر آجائو، دروازہ کھلا ہے۔ انہوں نے کہا تو زبیر اندر چلا گیا۔

یہ کیا بیٹا؟ اُس کے ہاتھوں میں تحائف دیکھ کر امّاں کی آنکھوں میں آنسو آگئے۔ زبیر کا دل بھی بھر آیا تھا اور اس کے گالوں پر بھی دو موتی بہہ گئے۔ حالاںکہ وہ اندر ہی اندر بہت ضبط کررہا تھا۔ اماں کے چاروں بیٹے جو بہت چھوٹے تھے، یہ سارا منظر دیکھ رہے تھے۔ زبیر نے وہ سامان اماں کو دے دیا۔ اُن کی خودداری گوارا نہیں کررہی تھی لیکن جب زبیر نے کہا کہ مَیں بھی آپ کا بیٹا ہوں تو وہ مجبور ہوگئیں۔ انہوں نے اسے ڈھیر ساری دعائیں دیں۔

زبیر بہت خوش تھا۔ اسے بار بار حضور اکرم ﷺ کی یہ حدیث مبارکہ یاد آرہی تھی؛ ’’جب نیکی اور بھلائی تمہیں مسرور اور شادمان کردے، برائی ناگوار گزرے تو سمجھ لوکہ تم مومن ہو۔‘‘

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔