بلوچستان میں پنجاب سے تعلق رکھنے والے 14 افراد کو بسوں سے اتار کر قتل کردیا گیا

ویب ڈیسک  منگل 6 اگست 2013
واقعہ کی اطلاع ملتے ہی سکیورٹی فورسز، پولیس اور لیویز نے علاقے کو گھیرے میں لے کر سرچ آپریشن شروع کردیا۔  فوٹو: آئی این پی

واقعہ کی اطلاع ملتے ہی سکیورٹی فورسز، پولیس اور لیویز نے علاقے کو گھیرے میں لے کر سرچ آپریشن شروع کردیا۔ فوٹو: آئی این پی

کوئٹہ: بلوچستان کے علاقے مچھ میں بسوں سے اغوا کیے گئے 24 میں سے 14 مسافروں کو شناخت کے بعد قتل جبکہ 10 کو چھوڑ دیا گیا۔

مسافر بسیں کوئٹہ سے راجن پور اور صادق آباد جا رہی تھیں کہ بلوچستان کے علاقے مچھ میں گشتری کے مقام پر نامعلوم مسلح افراد نے مسافر بسوں سے 24 مسافروں کو اتار کر اغواء کر لیا، اطلاعات کے مطابق 24 میں سے 14 مسافروں کو شناخت کے بعد قتل کردیا گیا جن کی لاشیں مچھ کے قریبی پہاڑوں سے ملیں، مغویوں کو جائے وقوعہ سے 10 کلو میٹر پیدل لے جانے کے بعد قتل کیا گیا، لاشوں کو اسپتال منتقل کردیا گیا، جاں بحق ہونے والے تمام افراد کا تعلق  فیصل آباد، رحیم یار خان ،بہاولپور  صادق آباد اور مظفر گڑھ سے ہے۔

اسسٹنٹ کمشنر مچھ ڈاکٹر کاشف محمد بنی کے مطابق دیگر اغوا کیے جانے والے 10 افراد کو شناختی کارڈ چیک کرنے کے بعد چھوڑ دیا گیا، واقعے کی اطلاع ملتے ہی سکیورٹی فورسز، پولیس اور لیویز نے علاقے کو گھیرے میں لے کر سرچ آپریشن شروع کردیا۔

کالعدم عسکریت پسند تنظیم بلوچ لبریشن فرنٹ نے برطانوی نشریاتی ادارے سے بات کرتے ہوئے مسافروں کے اغوا اور قتل کی ذمہ داری قبول کر لی ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔