ڈی آر ایس کے معاملے پر انگلینڈ اورآسٹریلیا کا غصہ ٹھنڈا

اسپورٹس ڈیسک  جمعرات 8 اگست 2013
آئی سی سی کے جنرل منیجرکی دونوں ٹیموں کے نمائندوں اور امپائرز سے ملاقات۔ فوٹو: فائل

آئی سی سی کے جنرل منیجرکی دونوں ٹیموں کے نمائندوں اور امپائرز سے ملاقات۔ فوٹو: فائل

لندن: آئی سی سی نے ڈی آر ایس کے معاملے پر انگلینڈ اور آسٹریلیا کا غصہ ٹھنڈا کر دیا۔

ایشز سیریز کے اختتامی دونوں ٹیسٹ میں بھی ہاٹ اسپاٹ کا استعمال کیا جائے گا،گزشتہ روز ڈرہم میں کونسل کے جنرل منیجر کرکٹ جیف ایلرڈائس نے انگلش و آسٹریلوی ٹیموں کے نمائندوں اور امپائرز سے ملاقات کی، اس موقع پر ڈی آر ایس کی حالیہ کارکردگی پر تبادلہ خیال کیا گیا، بعدازاں ایک بیان میں ایلرڈائس نے میٹنگ کو انتہائی تعمیری قرار دیتے ہوئے کہا کہ سب نے ڈی آر ایس کی  حمایت کا اعادہ کیا ہے، ایشز کے اگلے دونوں میچز میں بھی اسے استعمال کیا جائے گا،انھوں نے کہا کہ ہم تسلیم کرتے ہیں کہ گزشتہ تینوں ٹیسٹ میں سسٹم ماضی کی کسی سیریز جیسا کارآمد دکھائی نہیں دیا، میرے انگلینڈ آنے کا مقصد ٹیموں کی رائے معلوم کر کے ڈی آر ایس کو آگے بڑھانے کیلیے بہتری کی راہیں تلاش کرنا تھا، دونوں ٹیموں کی جانب سے حمایت خاصی حوصلہ افزا ہے۔

میٹنگ کے دوران پیش کی گئی بعض تجاویز سسٹم میں بہتری لائیں گی، ان پر آئی سی سی مزید غور کرے گی، ایلرڈائس نے تصدیق کی کہ ملاقات میں ہاٹ اسپاٹ کی کارکردگی پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا، اس جدید ٹیکنالوجی سے گیند کے بیٹ سے ٹکرانے  کا علم ہوتا ہے، جب کبھی ری پلے کے دوران بیٹ پر نشان نظر آئے اس کا مطلب ایج لگنا ہے،آپریٹر کے ساتھ کئی برسوں سے کام کرنے کی وجہ سے ہم جانتے ہیں کہ بیشتر ایجز کا ہاٹ اسپاٹ سے پتا چل جاتا ہے،  مگر بعض اوقات ایسا نہیں بھی ہوتا، اگر ہاٹ اسپاٹ میں نشان نہ آئے تو ٹی وی امپائر مختلف اینگلز سے ری پلیز دیکھ کر ایج کی نشاندہی کی کوشش کرتا اور اسٹمپ مائیکرو فون کی آواز سے بھی اس کا اندازہ لگا سکتا ہے، انھوں نے کہا کہ آئی سی سی ڈی آر ایس میں بہتری کیلیے کوشاں ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔