ساتھیوں کو پھانسی دی تو پنجاب حکومت کیخلاف کارروائی کا آغاز کردیں گے،طالبان کی دھمکی

ویب ڈیسک  منگل 13 اگست 2013
 حکومت نے ہمارے ساتھیوں کو پھانسی دی تو ان کا یہ اقدام اعلانِ جنگ تصور کیا جائے گا،ترجمان طالبان  فوٹو: فائل

حکومت نے ہمارے ساتھیوں کو پھانسی دی تو ان کا یہ اقدام اعلانِ جنگ تصور کیا جائے گا،ترجمان طالبان فوٹو: فائل

کالعدم تحریک طالبان پاکستان نے حکومت پنجاب کو خبردار کیا ہے کہ اگر ان کے 4 ساتھیوں کو پھانسی  کی  سزا دی گئی تو پنجاب حکومت کے خلاف بڑے پیمانے پر کارروائیوں کا آغاز کر دیا جائے گا۔

کا لعدم تحریک طالبان کے ترجمان  شاہد اللہ شاہد  نے بر طانوی نشریاتی ادارے  کو بتایا کہ انہیں اطلاعات موصول ہوئیں ہیں کہ  عقیل عرف ڈاکٹر عثمان اور 3 دیگر ساتھیوں کو فیصل آباد منتقل کیاگیا ہے جہاں رواں ماہ انھیں پھانسی دے دی  جائے گی، حکومت کا یہ اقدام اعلانِ جنگ تصور کیا جائے گا جس کے بعد تحریک طالبان پنجاب حکومت اور حکمران جماعت کے خلاف اپنی کارروائیاں شروع کر دے گی۔طالبان ترجمان کے مطابق وہ اب بھی سمجھتے ہیں کہ مسلم لیگ(ن) ملک میں امن کی خواہاں ہے لیکن پاک فوج اور اسٹیبلشمنٹ انہیں طالبان کے خلاف جنگ میں دھکیلنا چاہتی ہے۔

عقیل عرف ڈاکٹر عثمان کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ ان کا تعلق کالعدم لشکر جھنگوی سے ہے اور انہیں اکتوبر  2009 میں جی ایچ کیو پر ہونے والے حملے کا ماسٹر مائینڈ سمجھا جاتا ہے۔

واضح رہے کہ  پیپلز پارٹی کے دور حکومت میں صدرآصف زرداری نے ایک آرڈیننس کے ذریعے پھانسی کی سزا پر عمل درآمد روک دیا  تھا جس کی معیاد پوری ہونے کے بعد یہ قانون اب خودبخود لاگوہوگیا ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔