بھارت میں ہندو تنظیم کے کارکنوں نے پاکستانی مصوروں کے فن پارے پھاڑ دیئے

ویب ڈیسک  ہفتہ 17 اگست 2013
پھاڑی جانے والی  پینٹگزمیں معروف پاکستانی آرٹسٹ منصور راہی، عرفان گل دھری، عقیل سولنگی  اور ثنا ارجمند کی پینٹگز بھی شامل تھیں۔

پھاڑی جانے والی پینٹگزمیں معروف پاکستانی آرٹسٹ منصور راہی، عرفان گل دھری، عقیل سولنگی اور ثنا ارجمند کی پینٹگز بھی شامل تھیں۔

بھارتی شہر احمدآباد میں ہندو تنظیم کے ارکان نے پاکستان سے تعصب کا ایک اور ثبوت دیتے ہوئے آرٹ گیلری پر دھاوا بول کر پاکستانی مصوروں کے قیمتی فن پاروں کو  پھاڑ ڈالا۔

دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت کے علم بردار ملک کے شہر احمد آباد کی معروف آرٹ گیلری “احمد آباد نی گوفا” میں پاکستانی اور بھارتی مصوروں کے فن پاروں کی نمائش  میں انتہا پسند ہندو تنظیم وشوا ہندو پریشد کے 10 سے زائد دہشت گردوں نے دھاوا بول دیا اور نمائش کے لئے پیش کی گئی پاکستانی مصوروں کی 30 پینٹگز کو دیواروں سے اکھاڑ کر انہیں پھاڑ دیا۔

 بھارتی انتہا پسندوں کا کہنا تھا کہ بھارت میں پاکستانی مصوروں کی تصاویر کے لیے کسی بھی آرٹ گیلری میں کوئی جگہ نہیں ہے،  وہ اپنے فن کا مظاہرہ اپنے ہی  ملک میں ہی کریں۔ پھاڑ دی جانے والی  پینٹگزمیں معروف پاکستانی آرٹسٹ منصور راہی، عرفان گل دھری، عقیل سولنگی  اور ثنا ارجمند کی پینٹگز بھی شامل تھیں ۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔