مصر کی موجودہ صورتحال کا ذمے دار امریکا ہے، شاہ عبداللہ

نیٹ نیوز / خبر ایجنسیاں  منگل 20 اگست 2013
انڈونیشیا میں ہزاروں افراد کا مصری اسلام پسندوں کے حق میں مظاہرہ۔  فوٹو : فائل

انڈونیشیا میں ہزاروں افراد کا مصری اسلام پسندوں کے حق میں مظاہرہ۔ فوٹو : فائل

ریاض / واشنگٹن:  سعودی عرب کے شاہ عبداللہ نے کہ اہے کہ امریکا عرب ممالک کی سیاست میں مداخلت کررہاہے، مصر کی موجودہ صورتحال کا ذمے دار واشنگٹن ہے۔

جبکہ سعودی وزیر خارجہ شہزادہ سعود الفیصل نے کہا کہ مغربی ممالک نے قاہرہ کی امداد کم کی تو عرب ممالک ازالہ کریں گے۔ ادھر مصر میں غزہ کی سرحد کے قریب جزیرہ نما صحرائے سینا میں جنگجوئوں کے حملے میں 24 پولیس اہلکار قتل کر دیے گئے۔ امریکی جریدے ’’ٹائم‘‘ کے مطابق سعودی عرب کے بادشاہ نے ریاض میں اپنے میں بیان میں امریکا کا نام لیے بغیر کہا کہ امریکی صدر براک اوباما گزشتہ 2 سال سے لیبیا، مصر اور دیگر عرب ممالک کی سیاست میں مداخلت کر رہے ہیں‘ واشنگٹن نے مصر میں آگ کا کھیل کھیلا اور اب خود جل رہا ہے۔

اپنے بیان میں شاہ عبداللہ نے عرب ممالک سے اپیل کی کہ وہ دہشت گردی کے خاتمے میں مصری حکومت کا ساتھ دیں۔ دوسری جانب سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل نے بیان میں کہا کہ مصر میں جو کچھ بھی ہوا فوجی بغاوت نہیں تھی بلکہ خفیہ کارروائی تھی۔

شہزادہ فیصل کا کہنا تھا اگر مغرب نے مصر کی امداد میں کمی کی تو سعودی عرب سمیت عرب ممالک اس امداد کا ازالہ کریں گے۔ دوسری طرف پیرس میں سعودی وزیر خارجہ سعودالفیصل نے فرانس کے صدر فرانسکو ہالینڈے سے ملاقات کے بعد العربی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سعودی عرب اور فرانس نے اس امر اتفاق کر لیا ہے کہ مصر میں فوج کی طرف سے دیے گئے ’’روڈ میپ‘‘ کو موقع دیا جائے۔

ادھر انڈونیشیاء میں ہزاروں افراد نے مصری اسلام پسندوں کے حق میں مظاہرہ کیا اور مصری سفارتخانہ کی جانب مارچ کیا۔ مصر میں جاری کشیدگی اور اس صورتحال میں عام شہرویں کے قتل عام کے واقعات کے بعد یورپی یونین کے سفیروں کا ہنگامی اجلاس طلب کر لیا گیا جس میں مصر کو دی جانے والی امداد پر نظرِ ثانی کی جا رہی ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔