تھیلیسیمیا میں مبتلا بچے کو ’’پولیس افسر‘‘ بنا دیا گیا

اسٹاف رپورٹر  اتوار 19 مئ 2019
بچہ پولیس یونیفارم پہننا چاہتا تھا،خواہش پوری کر دی، ڈی آئی جی ساؤتھ شرجیل کھرل۔ فوٹو: فائل

بچہ پولیس یونیفارم پہننا چاہتا تھا،خواہش پوری کر دی، ڈی آئی جی ساؤتھ شرجیل کھرل۔ فوٹو: فائل

کراچی: پولیس حکام نے تھیلیسیمیا میں مبتلا بچے کی پولیس افسر بننے کی خواہش پوری کردی۔

ڈی آئی جی ساؤتھ شرجیل کھرل نے بتایا کہ ساؤتھ زون پولیس نے سی پی ایل سی اور سول سوسائٹی کے ذریعے یوحنا سجاد کی خواہش پوری کی ، یوحنا سجاد تھیلیسیمیا کا مریض ہے اور اس نے خواہش ظاہر کی تھی کہ وہ بڑا ہوکر پولیس افسر بننا چاہتا ہے اور وہ یونیفارم پہننا چاہتا ہے ، اس کی اس خواہش کے احترام میں اسے پولیس یونیفارم پہنائی گئی جبکہ کلفٹن میں ساحل سمندرکے قریب شاپنگ مال کے سامنے اس سے اسنیپ چیکنگ بھی کرائی گئی، یوحنا نے کئی گاڑیاں روکیں اور خلاف قانون چلنے والی کئی گاڑیوں کے چالان بھی کیے۔

شرجیل کھرل نے مزیدکہا کہ اس طرح کے اقدام کے تحت سول سوسائٹی کی مدد سے شہریوں اور پولیس کے درمیان فاصلے بھی کم کرنے میں مدد ملے گی۔

ایک سوال کے جواب میں ڈی آئی جی ساؤتھ نے بتایاکہ رمضان المبارک کے دوران ساؤتھ زون میں اسنیپ چیکنگ بڑھادی گئی ہے، چیکنگ کے دوران سی پی ایل سی کے افسران بھی پولیس حکام کے ہمراہ ہوتے ہیں اور موقع پر ہی گاڑی کی ویریفکیشن ہوجاتی ہے ، شہریوں کے جان و مال کے تحفظ کیلیے ہرممکن اقدام کیے جارہے ہیں۔

 

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔