کراچی: فائرنگ سے متحدہ کے کارکن سمیت4ہلاک، پولیس و رینجرز کے چھاپے، 89گرفتار

اسٹاف رپورٹر  جمعـء 6 ستمبر 2013
کورنگی،شاہ فیصل کالونی،گلبہار،ناظم آباد،پاپوش نگر،گلبرگ ودیگرعلاقوں میں پولیس ورینجرز کی کارروائیاں، اسلحہ برآمدکرنے کادعویٰ  فوٹو: فائل

کورنگی،شاہ فیصل کالونی،گلبہار،ناظم آباد،پاپوش نگر،گلبرگ ودیگرعلاقوں میں پولیس ورینجرز کی کارروائیاں، اسلحہ برآمدکرنے کادعویٰ فوٹو: فائل

کراچی:  رینجرزاور پولیس تابڑتوڑچھاپوں اور ٹارگٹڈآپریشن کے باوجود شہر میں اغواکے بعدقتل اور ٹارگٹ کلنگ کاسلسلہ جاری رہا،دہشت گردوں نے متحدہ قومی موومنٹ کے کارکن سمیت4افراد کوقتل اورخاتون سمیت8کوزخمی کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق جمشیدکوارٹر کے علاقے میں واقع یتیم خانہ کے قریب بدھ اورجمعرات کی درمیانی شب35سالہ شخص نیم مردہ حالت میں ملا جسے عباسی شہیداسپتال پہنچایاگیاجہاں اس کی شناخت سہیل کے نام سے ہوئی،پولیس کے مطابق سہیل دوران علاج زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گیا،مقتول گلبہار کا رہائشی اور متحدہ قومی موومنٹ گلبہار سیکٹر یونٹ169کا کارکن تھا،مقتول کے گھر والوں نے پولیس کو بتایاکہ سہیل بدھ کی شب تین ہٹی دوست کے پاس جانے کابول کر گیاتھا،رات گیارہ بجے اس سے فون پر بات ہوئی تھی جس پراس نے کہاتھا کہ کچھ دیربعدگھرآجائے گا،رات دیر تک گھر نہ آنے پر دوبارہ موبائل پر فون کیاتوفون بندملاجس پر گھر والوں کو تشویش ہوئی ،الصبح جمشید کوارٹر پولیس نے اطلاع دی کہ سہیل اسپتال میں ہے۔

شاہ فیصل کالونی نمبرایک اے ون ہوٹل کے قریب مکان نمبر 262 کے رہائشی30سالہ حفیظ اﷲ کو نامعلوم ملزمان نے گھر کے قریب فائرنگ کر کے ہلاک کر دیااورفرار ہو گئے،مقتول کی لاش جناح اسپتال لائی گئی،مقتول کا آبائی تعلق اندرون سندھ سے تھاجبکہ وہ سبزی فروش تھا،مقتول شراب اور چرس کا نشہ کرتا تھا اور اس سلسلے میں دو مرتبہ گرفتار ہو کرجیل جا چکا تھا ،مقتول کو علاقے کی کسی لڑکی کے تنازع پر قتل کیا گیا۔

سولجربازارکے علاقے نشترروڈپاکستان کوارٹرکے سامنے بلوچ گارڈن اپارٹمنٹ کے فلیٹ نمبرA/26کے رہائشی35 سالہ شاہ زیب بلوچ کو نامعلوم برقع پوش موٹر سائیکل سوار ملزمان نے بلوچ گارڈن کے مرکزی گیٹ کے سامنے فائرنگ کر کے ہلاک کر دیا، فائرنگ کی زد میں آکر 30 سالہ محمد جاویدزخمی ہو گیا،واردات کے بعد ملزمان فرار ہو گئے ،مقتول کی لاش سول اسپتال پہنچائی گئی ، مقتول 2 بھائیوں میں بڑاتھا،پولیس واقعے کی تحقیقات کر رہی ہے۔قائدآباد کے علاقے مسلم آبادکالونی عیدگاہ گراؤنڈ گلی نمبر 4 کے قریب نامعلوم ملزمان کی فائرنگ سے 35 سالہ سید رحیم ہلاک ہوگیا ۔

جس کی لاش جناح اسپتال لائی گئی ،مقتول کاآبائی تعلق کرک سے تھا۔ شفیق موڑ پاور ہاؤس چورنگی کے قریب نامعلوم ملزمان نے لوٹ مارکے دوران مزاحمت پر26 سالہ ریاض حسین کو فائرنگ کر کے زخمی کر دیا۔سولجر بازار ہولی فیملی اسپتال کے قریب نامعلوم ملزمان کی فائرنگ سے20 سالہ شاہ زیب مسیح زخمی ہو گیا۔محمود آبادکراچی ایڈمنسٹریشن سوسائٹی میں نامعلوم ملزمان کی فائرنگ سے40 سالہ تسلیم بی بی زوجہ سلیم زخمی ہو گئی۔شیرشاہ کوالٹی گودام کے قریب نامعلوم ملزمان کی فائرنگ سے40 سالہ عابد رضازخمی ہو گیا جسے طبی امداد کے لیے سول اسپتال پہنچایا گیا۔

پیر آباد کے علاقے قصبہ کالونی میں فائرنگ سے گل رحمان جبکہ اورنگی ٹاؤن سیکٹرساڑھے گیارہ راجہ تنویر کالونی میں فائرنگ سے35سالہ عبد الرحمٰن زخمی ہو گئے جنہیں عباسی شہید اسپتال پہنچایاگیا۔فیروز آباد کے علاقے خالد بن ولید روڈ پر پولیس کی فائرنگ سے 2 افراد 28 سالہ شوکت علی اور 32 سالہ محمد دائم زخمی ہو گئے جو بعدازاں پولیس سے بچنے کے بعدطبی امداد کے لیے جناح پہنچ گئے جہاں انھوں نے بتایا کہ ان کی گاڑی پر فائرنگ کی گئی جس میں وہ زخمی ہوگئے ،زخمیوں کی اطلاع ملتے ہی سی پی ایل سی اور اے وی سی سی کے افسران جناح اسپتال پہنچ گئے ۔

جہاں انکشاف ہوا کہ زخمی ہونے والے دونوں افراد پولیس مقابلے میں زخمی ہوئے تھے،ذرائع کا کہناہے کہ زخمی ہونے والے محمد دائم کی حالت تشویشناک ہے جبکہ پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ زخمی ہونے والے ایک اہم شخصیت کے ملازم اورمبینہ طور پر اغوا برائے تاون کی واردتوں میں ملوث بتائے جاتے ہیں ،دونوں زخمیوں کا تعلق اندرون سندھ سے ہے ، پولیس ذرائع کے مطابق ملزمان گذری سے اغوا کیے جانے والے ایک معمر شخص کی رہائی کے لیے تاوان وصول کرنے کے لیے آئے تھے تاہم پولیس اور سی پی ایل سی زخمی ہونے والوں کے بارے میں مزید تفصیلات بتانے سے گریز کر رہی ہے ۔

رینجرز اور پولیس نے شہر کے مختلف علاقوں میں ٹارگٹڈ آپریشن کے دوران ایک سیاسی جماعت سے تعلق رکھنے والے مبینہ ٹارگٹ کلر لیاری گینگ وار کے کارندوں اور منشیات فروش سمیت سمیت 89سے زائدمشتبہ افرادکوحراست میں لیکر اسلحہ برآمد کرنے کادعویٰ کیاہے۔

حراست میں لیے جانے والے افراد کو تفتیش کے لیے نامعلوم مقام پرمنتقل کر دیا گیا۔تفصیلات کے مطابق رینجرز نے کورنگی پونے6نمبرپر ٹارگٹڈ آپریشن کے دوران اعجاز عرف کالا منا کو حراست میں لے کر تفتیش کے لیے نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا ،رینجرز نے دعویٰ کیا ہے کہ ملزم اعجاز نے انکشاف کیاہے کہ اس نے متعدد افراد کو ٹارگٹ کر کے قتل کیاجبکہ اس کا تعلق ایک سیاسی جماعت سے ہے ،ملزم کچھ عرصہ قبل بھی گرفتار کیاگیا بعد ازاں اس پر کسی قسم کو جرم ثابت نہیں ہوا تھاجس پر اسے چھوڑ دیا گیا تھا۔رینجرز نے کورنگی کے دیگر علاقوں میں آپریشن کے دوران20سے زائد افراد کو حراست میں لے کر ان کے قبضے سے اسلحہ برآمد کر لیا،حراست میں لیے جانے والے ملزمان کو تفتیش کے لیے نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا۔

ڈی ایس پی گلبرگ الطاف حسین کی سربراہی میں پولیس پارٹی نے سمن آبادکے علاقے میں آپریشن کے دوران 2 ملزمان راشد اورکریم کو گرفتار کر کے ان کے قبضے سے 2 ٹی ٹی پستول برآمدکر لیں۔ایس ایچ او گلبہار شوکت علی نے پولیس کی بھاری نفری کے ہمراہ حسن کالونی میں ٹارگٹڈ آپریشن کرتے ہوئے لیاری گینگ وار اورمنشیات فروش گروپ کے لالہ عرف جوزف،پرویز عرف گڈو سمیت4ملزمان کو گرفتار کرلیا جن کے قبضے سے اسلحہ اور5کلو چرس برآمدکرلی۔سکھن پولیس نے لوٹ مارکرنے والے ملزم ماجد کو گرفتار کیا۔ایس ایچ او شرافی گوٹھ اخلاق احمدنے پولیس اوررینجرز کی نفری کے ہمراہ کاروائی کرتے ہوئے 3 ملزمان کو گرفتار کرکے اسلحہ برآمد کر لیا۔درخشاں پولیس نے ملزم دلبرکوگرفتار کرکے ایک ٹی ٹی پستول اور موٹرسائیکل برآمد کرلی۔

ناظم آباد کے علاقے پاپوش اورکیماڑی کے علاقے مچھر کالونی میں پولیس اور رینجرز نے مشترکہ طور پر ٹارگٹڈآپریشن کے دوران گھر گھر تلاشی لی،کاروائی کرتے ہونے25 مشتبہ افراد کو حراست میں لے کر ان کے قبضے سے اسلحہ برآمد کرنے کا دعویٰ کیا ہے ۔حراست میں لیے جانے والوں میں لیاری گینگ وار کے ملزمان بھی شامل ہیں ۔شاہ فیصل پولیس کالونی نمبر3میں پولیس نے کاروائی کرتے ہوئے ملزم سلمان کو گرفتار کرلیا ،پولیس کے مطابق ملزم سلمان ایک لڑکی کے قتل میں ملوث ہے جس سے تفتیش کی جارہی ہے ۔رینجرز انٹیلیجنس ونگ نے کھارادر کے علاقے پنجابی کلب پر ٹارگٹڈ آپریشن کے دوران سیاسی تنظیم اور لیاری گینگ وار سے تعلق رکھنے والے15مشتبہ افراد کو حراست میں لینے کا دعویٰ کیاہے۔

جن سے نامعلوم مقام پر منتقل کرکے پوچھ گچھ شروع کردی گئی ہے ۔رات گئے ملنے والی اطلاعات کے مطابق رینجرز سندھ نے ٹارگٹڈآپریشن کے دوران رامسوامی کے علاقے چیلا رام کمپاؤنڈ پر چھاپہ مار کر 2 افراد کو حراست میں لے کر دستی بم ، 2 ٹی ٹی پستول ، رائفل اور ریپیٹر برآمد کرلیا جبکہ رینجرز نے سہراب گوٹھ کے علاقے جنجال گوٹھ میں چھاپہ مار کر 18 افراد کو حراست میں لے لیا جس میں 2 افراد کا تعلق کالعدم تنظیم سے بتایا جاتاہے جبکہ رینجرز نے سلطان آباد میں بھی چھاپے کے دوران 8 سے زائد افراد کو حراست میں لے لیا،چھاپہ مار کارروائیوں کے دوران حراست میں لیے جانے والوں کو تفتیش کے لیے نامعلوم مقام پر منتقل کر دیاگیا ۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔