لاہور سفاری زو میں نایاب نسل کے عربین آڈکس کو مصنوعی ٹانگ لگانے کی تیاریاں

 منگل 25 جون 2019
نر آڈکس کی پچھلی ٹانگ حادثاتی طور پر ٹوٹ گئی تھی فوٹو: ایکسپریس

نر آڈکس کی پچھلی ٹانگ حادثاتی طور پر ٹوٹ گئی تھی فوٹو: ایکسپریس

 لاہور: سفاری زو میں حادثاتی طور پر زخمی ہونیوالے نایاب نسل کے عربین آڈکس کی ایک ٹانگ کاٹ دی گئی ہے جس کی جگہ اب مصنوعی ٹانگ لگانے کی کوشش کی جائے گی۔

لاہور سفاری زو میں اس وقت نایاب نسل کے 3 آڈکس ہیں جن میں سے سب سے بڑے نر آڈکس کی پچھلی ٹانگ حادثاتی طور پر ٹوٹ گئی تھی۔

سفاری زو کے ڈپٹی ڈائریکٹرچوہدری شفقت علی نے بتایا کہ آڈکس کی ٹوٹی ٹانگ کا ویٹرنری یونیورسٹی لاہور میں علاج کروایا گیا، ٹانگ پر پلستر کیا گیا تھا تاہم وہ کامیاب نہیں ہوسکا اور ٹانگ پر مزید زخم بن گئے۔ اب مجبوراً آڈکس کی جان بچانے کے لیے اس کی ٹانگ کو کٹوانا پڑا ہے تاہم کاٹی گئی ٹانگ کی جگہ مصنوعی ٹانگ لگانے کی کوشش کی جائے گی۔ پہلی بار کسی جانور کو مصنوعی ٹانگ لگانے کا تجربہ کیا جائے گا۔

علاوہ ازیں مالی سال 20-2019 کے لیے سفاری پارک میں ترقیاتی بجٹ مختص نہیں کیا گیا ہے جس کی وجہ سے نائٹ سفاری، سیکیورٹی اور سفاری زو کی چار دیواری کے منصوبے ملتوی کردیئے گئے ہیں۔ نائٹ سفاری زو منصوبے کا آئیڈیا سابق پنجاب حکومت کا تھا، موجودہ حکومت نے بھی اقتدارسنبھالنے کے بعد اس منصوبے کو شروع کرنے کے بلند وبانگ دعوی کیے تھے تاہم آئندہ مالی سال میں اس منصوبے کے لیے ایک روپیہ بھی مختص نہیں کیا گیا ہے۔

سفاری زو کے ڈپٹی ڈائریکٹر چوہدری شفقت علی اس بات کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ بجٹ میں سفاری پارک کے لیے 21 ملین روپے رکھے گئے ہیں تاہم یہ رقم سفاری زو کے ایک کنٹریکٹر کو ادا کی جانی ہے، لاہور ہائی ہائیکورٹ نے اس کی ادائیگی کا حکم دیا ہے۔نئے منصوبے تو دور کی بات ہے جاری منصوبوں کی تکمیل کے لیے بھی فنڈز مختص نہیں کیے گئے جس کی وجہ سے یہاں مختلف جانوروں اور پرندوں کے لیے زیر تعمیر 10 کے قریب پنجرے اور احاطے نامکمل رہ جائیں گے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔