تمباکو نوشی اندھے پن کا بھی باعث بن سکتی ہے

میگزین رپورٹ  جمعرات 11 جولائ 2019
برطانیہ میں سگریٹ نوشی میں کمی، 61فیصد شہری اس عادت سے جان چھڑانا چاہتے ہیں۔ فوٹو: فائل

برطانیہ میں سگریٹ نوشی میں کمی، 61فیصد شہری اس عادت سے جان چھڑانا چاہتے ہیں۔ فوٹو: فائل

ماہرین صحت نے تنبیہ کی ہے کہ ایسے لاکھوں افراد جو تمباکو نوشی کی علت میں مبتلا ہیں وہ اپنی بینائی کو داؤ پر لگا رہے ہیں۔

اگرچہ تمباکو نوشی کا بینائی پر اثر ہونا ایک معلوم حقیقت ہے تاہم ’ایسوسی ایشن آف آپٹومیٹرسٹس‘ کے ایک حالیہ سروے کے مطابق ہر پانچ تمباکو نوش افراد میں سے صرف ایک فرد اس حقیقت سے آگاہ ہے کہ تمباکو نوشی اندھے پن کا بھی باعث بن سکتی ہے۔

برطانیہ کے ’رائل نیشنل انسٹیٹیوٹ آف بلائنڈ پیپل‘ (آر این آئی بی) کا کہنا ہے کہ تمباکو نوشی کرنے والے افراد میں بینائی کھو دینے کی شرح ایسا نہ کرنے والے افراد کی نسبت دگنی ہوتی ہے۔ اور اس کی وجہ یہ ہے کہ تمباکو کا استعمال آنکھوں کو درپیش کئی مسائل میں اضافے کا باعث بنتا ہے۔

تمباکو نوشی آنکھوں کو کیسے متاثر کرتی ہے؟

سگریٹ میں کافی مہلک کیمیکلز پائے جاتے ہیں جو آپ کی آنکھوں کو متاثر کر سکتے ہیں یا ان کے لیے نقصان دہ ہو سکتے ہیں۔ مثال کے طور پر دھاتیں جیسا کہ سیسہ اور تانبا آنکھ کے پردے میں اکھٹی ہوسکتی ہیں۔ آنکھ کے پردے کا کام آنکھ میں داخل ہونے والی روشنی کو فوکس کرنا ہے۔ آنکھ کے پردے کا متاثر ہونا بصارت میں دھندلے پن کی بنیادی وجہ ہے۔

تمباکو نوشی ذیابیطس کی وجہ سے بینائی میں پیدا ہو جانے والے مسائل میں بھی اضافے کا سبب بنتی ہے کیونکہ اس کی وجہ سے آنکھ کے پیچھے موجود خون فراہم کرنے والی رگیں متاثر ہوتی ہیں۔ تمباکو نوش افراد میں عمر کے ساتھ بینائی میں آنے والا انحطاط تمباکو نوشی نہ کرنے والے افراد کی نسبت تین گنا زیادہ ہو سکتا ہے۔ بینائی میں انحطاط کے باعث انسان ہر چیز کو واضح اور صاف انداز میں دیکھنے کی صلاحیت سے محروم ہو جاتا ہے۔

علاوہ ازیں تمباکو نوش افراد میں نظر کے اچانک کمزور ہو جانے کا اندیشہ تمباکو نوشی نہ کرنے والے افراد سے16 گنا زیادہ ہوتا ہے۔ نظر کا اچانک کمزور ہونا بصری اعصابی نظام میں بگاڑ کی وجہ سے ہوتا ہے۔

دو ہزار سے زائد افراد سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں 18 فیصد کا کہنا تھا کہ تمباکو نوشی اندھے پن یا نظر کے کمزور ہونے کا باعث بنتی ہے جبکہ 76فیصد کو پتا تھا کہ تمباکو نوشی کا تعلق کینسر سے ہے تاہم ایسوسی ایشن آف آپٹومیٹرسٹس کا کہنا ہے کہ بینائی کی حفاظت کے لیے سب سے بہترین آپشن تمباکو نوشی کو مکمل ترک کرنا یا اس عادت کو کم کرنا ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ آپ اپنی نظر کو باقاعدگی سے چیک کروائیں۔

ایسوسی ایشن سے وابستہ ماہر بصارت عائشہ فضلین کا کہنا ہے کہ لوگوں کا عمومی خیال یہ ہوتا ہے کہ تمباکو نوشی کا تعلق کینسر سے ہے۔ تاہم زیادہ تر افراد بینائی پر اس کے اثرات سے آگاہ ہی نہیں ہیں۔

’تمباکو نوشی بینائی کے لیے خطرے کا باعث بننے والی کیفیات میں اضافے کرتی ہے جیسا کہ ڈھلتی عمر کے ساتھ نظر متاثر ہونا۔ اور یہ وہ خاص وجہ ہے جس کے باعث تمباکو نوشی کرنے والوں کو اس عادت کو ترک کرنے کے بارے میں ضرور سوچنا چاہیے۔‘

تمباکو نوش افراد کی تعداد میں کمی

برطانیہ میں17 فیصد مرد اور 13 فیصد خواتین تمباکو نوشی کرتی ہیں۔ برطانیہ میں تمباکو نوشی کرنے والوں کی تعداد 74 لاکھ ہے۔ جبکہ 61 فیصد تمباکو نوشی کرنے والوں کا کہنا ہے کہ وہ اس عادت سے اپنی جان چھڑوانا چاہتے ہیں۔

برطانیہ کے قومی ادارہ شماریات سے ملنے والے اعداد و شمار ظاہر کرتے ہیں کہ وہاں تمباکو نوشی کرنے والے افراد کی تعداد کم ہو رہی ہے۔ سنہ 2011 کے بعد 18 سے 24 سال کی عمر کے لوگوں میں تمباکو نوشی چھوڑنے والوں کی تعداد میں سب سے زیادہ کمی دیکھی جا رہی ہے۔

سنہ 2017 میں برطانیہ میں 28 لاکھ افراد، یا برطانیہ کی آبادی کا 5.5 فیصد، ای سگریٹ استعمال کر رہے تھے۔ اور ای سگریٹ استعمال کرنے والوں میں غالب اکثریت ایسے افراد کی تھی جو تمباکو نوشی کو ترک کرنے کے لیے ایسا کر رہے تھے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔