پوری زندگی کین ولیمسن سے معافی مانگتا رہوں گا، بین اسٹوکس

میاں اصغر سلیمی  پير 15 جولائ 2019
کیوی کپتان سے کہا کہ جان بوجھ کر یہ حرکت نہیں کی تھی، انگلش آل راؤنڈر - فوٹو: آئی سی سی

کیوی کپتان سے کہا کہ جان بوجھ کر یہ حرکت نہیں کی تھی، انگلش آل راؤنڈر - فوٹو: آئی سی سی

ورلڈ کپ فائنل میں اپنی شاندار کارکردگی سے انگلینڈ کو چیمپئن بنانے میں اہم کردار ادا کرنے والے بین اسٹوکس نے نیوزی لینڈ کے کپتان کین ولیمسن سے معافی مانگ لی۔

ورلڈکپ ٹائٹل اپنے نام کرنے کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے انگلینڈ کے مایہ ناز آل راؤنڈر بین اسٹوکس نے کہا کہ انہوں نے نیوزی لینڈ کے کپتان کین ولیمسن سے 4 اضافی رنز کے بارے میں بات کرکے ان سے معافی مانگی ہے اور ان سے یہ بھی کہا کہ میں نے یہ جان بوجھ کر نہیں کیا تھا، میں نے کین سے کہا کہ میں اپنی پوری زندگی اس بات کی معافی مانگتا رہوں گا۔

بین اسٹوکس کا مزید کہنا تھا کہ عالمی چیمپیئن بننا شاندار احساس ہے اور اس خوشی کوبیان کرنے کیلئے ان کے پاس الفاظ نہیں ہیں، گزشتہ 4 سال میں ہم نے سخت محنت کی جس کا صلہ بڑی کامیابی کی صورت میں ملا۔ انہوں نے کہا کہ نیوزی لینڈ کے خلاف کھیلنا بہت ہی زبردست ہوتا ہے کیونکہ وہ بہت ہی اچھی ٹیم ہیں۔ انہوں نے شاندار سپر اوور کرانے والے جوفرآرچر کی بھی تعریف کی۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ میچ کے 50 ویں اوور میں بین اسٹوکس کو تھرو لگ کر باﺅنڈری کے پار پہنچ گیا تھا جس کے باعث انگلش ٹیم کو اس گیند پر 2 کے بجائے 6 رنز مل گئے اور میچ برابر ہونے کی راہ ہموار ہوگئی تھی ۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔