حکومتی وفد کی ایم کیو ایم رابطہ کمیٹی سے ملاقات، تحفظات دور کرنے کی یقین دہانی

ویب ڈیسک  منگل 23 جولائ 2019
پیپلز پارٹی کو تیسری بار سندھ میں حکومت ملی لیکن صوبے کے حالات بدتر ہوتے جارہے ہیں، جہانگیر ترین فوٹو: فائل

پیپلز پارٹی کو تیسری بار سندھ میں حکومت ملی لیکن صوبے کے حالات بدتر ہوتے جارہے ہیں، جہانگیر ترین فوٹو: فائل

 کراچی: جہانگیر ترین کی سربراہی میں حکومتی وفد نے ایم کیو ایم پاکستان کی رابطہ کمیٹی سے ملاقات کی ہے جس میں انہوں نے تمام تحفظات دور اور مطالبات پورے کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے۔

کراچی میں ایم کیو ایم پاکستان کے رہنماؤں سے ملاقات کے بعد جہانگیر ترین نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ پیپلز پارٹی کو تیسری بار سندھ میں حکومت ملی لیکن سندھ کے حالات بد سے بدتر ہوتے جارہے ہیں، کراچی کچرے کا ڈھیر بن چکا ہے،پانی کا بحران شدت اختیار کرچکا ہے، وفاقی حکومت پانی کا بحران ختم کرنے میں کردار ادا کرنے کے لیے تیار ہے۔

اس سے قبل پاکستان تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر ترین کی سربراہی میں حکومتی وفد کراچی میں ایم کیو ایم پاکستان کے عارضی مرکز پہنچے ، تحریک انصاف کے وفد میں سندھ اسمبلی میں قائد حزب اختلاف لیڈر فردوس شمیم نقوی ، خرم شیر زمان ، جمال صدیقی اور دیگر شامل تھے۔ حکومتی وفد نے ایم کیو ایم کنونیر ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی، نسرین جلیل ، کنور نوید ، وسیم اختر اور محمد حسین سمیت رابطہ کمیٹی کے دیگر ارکان سے ملاقات کی۔ اس موقع پر ملک کی موجودہ صورت حال، چیئرمین سینیٹ کے خلاف تحریک عدم اعتماد اور دیگر امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

ملاقات سے قبل میڈیا سے بات کرتے ہوئے جہانگیر ترین نے کہا کہ شہر کے مسائل سے واقف ہیں، کراچی کی ترقی اور ترقیاتی منصوبوں کی جلد تکمیل وزیراعظم کی اولین ترجیع ہے، بلدیاتی نمائندوں کو اختیارات کی فراہمی ، فنڈز کی شفافیت کے ساتھ منتقلی اور عوام کی فلاح میں ان کا استعمال پی ٹی آئی کا ایجنڈا ہے، تحریک انصاف اپنے وعدے اور تحریری معاہدے پر من و عن عمل کرے گی ، تحریری معاہدے پر کتنا عمل ہوا ہے اور اس میں کیا پیش رفت ہے اسی لیے آج ایم کیو ایم کے دوستوں سے ملنے آیا ہوں، ایم کیو ایم کے تمام تحفظات دور اور مطالبات پورے کریں گے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔