مسلم کش فسادات کی آگ بھڑکانے والا بی جے پی کا رکن اسمبلی سریش رانا گرفتار

ویب ڈیسک  جمعـء 20 ستمبر 2013
بی جے پی رہنما کو گومتی نگر کے علاقے سے اس وقت گرفتار کیا گیا جب وہ اسبملی کے اجلاس میں شرکت کے بعد باہر آ رہے تھے۔ فوٹو: فائل

بی جے پی رہنما کو گومتی نگر کے علاقے سے اس وقت گرفتار کیا گیا جب وہ اسبملی کے اجلاس میں شرکت کے بعد باہر آ رہے تھے۔ فوٹو: فائل

لکھنئو: بھارتیہ جنتا پارٹی سے تعلق رکھنے والے اترپردیش اسمبلی کے رکن سریش رانا کو مظفر نگر میں ہندو انتہا پسند وں کو مسلمانوں کے خلاف فسادات پر اکسانے کے الزام میں گرفتار کر لیا گیا۔

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق پولیس نے بی جے پی رہنما سریش رانا کو  گومتی نگر کے علاقے سے اس وقت گرفتار کیا جب وہ اسبملی کے اجلاس میں شرکت کے بعد باہر آ رہے تھے ، اپنی گرفتاری سے قبل میڈیا سے بات کرتے ہوئے سریش رانا کا کہنا تھا کہ اگر حکومت میں ہمت ہے تو انہیں  گرفتار کرکے دکھائے۔

دوسری جانب  بی جے پی نے سریش رانا کی گرفتاری کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ دوسری سیاسی جماعتوں  بشمو ل ریاست کی حکمران جماعت سماج واد ی پارٹی کے اراکین پر الزاما ت کے باوجود کوئی کارروائی  نہیں کی گئی، بھارتیہ  جنتا پارٹی کے دیگر 3 رہنماوں حکم سنگھ، سنگیت سنگھ سوم اور کنور بھر ٹینڈو سنگھ کے خلاف بھی مظفر نگر کی عوام کو مسلمانوں کے خلاف اکسانے کے الزامات عائد کئے گئے ہیں  جبکہ پولیس کا کہنا ہے کہ ملزمان کی گرفتاری کے لئے چھاپے مارے جا رہے ہیں۔

 واضح رہے کہ  2 روز قبل  اترپردیش کی مقامی عدالت نے  مظفر نگر میں عوام کو فسادات کے لئے اکسانے پر مختلف سیاسی جماعتوں  کے 20 اراکین کے نا قابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری  کئے تھے ان میں بی جے پی کے 3 رہنماؤں کے علاوہ سماج وادی پارٹی کے 3  اور اور کانگریس کے ایک سابق رکن ریاستی اسمبلی بھی شامل ہیں، مظفرنگر میں ہندو مسلم فسادات کے دوران 40 سے زائد افراد ہلاک اورمتعدد زخمی ہوگئے تھے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔