پی ایس بی کی عدم دلچسپی، ویمنز سوئمنگ ایونٹ ملتوی

اسپورٹس رپورٹر  جمعرات 24 اکتوبر 2013
تیاریاں مکمل تھیں، ڈی جی نے اجازت دینے سے انکارکردیا، فیڈریشن کا الزام۔ فوٹو: فائل

تیاریاں مکمل تھیں، ڈی جی نے اجازت دینے سے انکارکردیا، فیڈریشن کا الزام۔ فوٹو: فائل

اسلام آباد: پی ایس بی کی عدم دلچسپی کے سبب25 اکتوبر سے شروع ہونے والی قومی ویمنز سوئمنگ چیمپئن شپ ملتوی کردی گئی۔

فیڈریشن حکام کے مطابق ایونٹ کے حوالے سے9 اکتوبر کو ڈی جی پی ایس بی سید امیر حمزہ گیلانی کو تحریری طور پر آگاہ کردیا تھا، ہم نے انھیں بتایا کہ قومی اسپورٹس پالیسی پر مکمل طور پر عملدرآمد کرتے ہوئے شفاف الیکشن کا انعقاد کیا ہے، ہمیں  پی ایس بی کی طرف سے گرانٹ اور قومی مقابلوں کے انعقاد کی اجازت دی جائے، سید امیر حمزہ گیلانی نے پاکستان سوئمنگ  فیڈریشن کے صدرمیجرماجد وسیم اور سیکریٹری وینا مسعود کو یقین دلایا کہ بورڈ ویمنز سوئمنگ چیمپئن شپ کیلیے ہر ممکن تعاون کرے گا، تاہم 23 اکتوبر کو ڈی جی نے بذریعہ ای میل بتایاکہ نیشنل ویمنز سوئمنگ چیمپئن شپ کے پی ایس بی میں انعقاد سے مسائل کا سامنا ہے جس کی وجہ سے ہم انعقاد کی اجازت نہیں دے سکتے۔

اس حوالے سے پاکستان سوئمنگ فیڈریشن کے صدر ماجد وسیم سے رابطہ کیا گیا تو انھوں نے کہاکہ وفاقی وزیر بین الصوبائی رابطہ  ریاض حسین پیر زادہ کو  ڈی جی اسپورٹس بورڈ کیخلاف سخت ایکشن لینا چاہیے۔ نمائندہ ’’ایکسپریس‘‘ سے گفتگو کرتے ہوئے انھوں نے کہاکہ ایونٹ کیلیے تمام انتظامات کو حتمی شکل دیدی گئی  تھی، میڈلز، اسناد، کھلاڑیوں کی رہائش اور دیگر تمام معاملات بھی مکمل تھے، واپڈا، ایچ ای سی، پنجاب، بلوچستان، سندھ، کے پی کے، فاٹا اور میزبان اسلام آباد کی ٹیموں نے شرکت پر آمادگی کا اظہار کیا تھا، سندھ اور پنجاب کی ٹیمیں تو اسلام آباد پہنچ چکی تھیں،مگر عین موقع پر پی ایس بی نے انعقاد کو روک کر کھیل دشمنی کا ثبوت دیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ یہ امر باعث تشویش ہے کہ حکومت ایک طرف تو ملکی وقار کو بلند کرنے کے دعوے کرتی ہے تو دوسری طرف قومی مقابلوں کے انعقاد میں رکاوٹیں کھڑی کی  جا رہی ہیں۔ انھوں نے کہا کہ ہم نے  بورڈ کو یقین دلایا تھا کہ ہمیں صرف سوئمنگ پول چاہیے،کھلاڑیوں کی رہائش کے انتظامات مکمل کیے جا چکے ہیں مگر پھر بھی اجازت نہ دی گئی۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔