جرمانے کے باوجود جنوبی افریقا کے کھلاڑی باز نہ آئے اور مورنی مورکل بھی ٹمپرنگ کرتے پکڑے گئے

ویب ڈیسک  ہفتہ 26 اکتوبر 2013
گزشتہ روز جنوبی افریقہ کے فاف ڈوپلیسس اور پیسر ورنون فلینڈر بال ٹیمپرینگ کرتے ہوئے پکڑے گئے تھے۔ فوٹو؛ فائل

گزشتہ روز جنوبی افریقہ کے فاف ڈوپلیسس اور پیسر ورنون فلینڈر بال ٹیمپرینگ کرتے ہوئے پکڑے گئے تھے۔ فوٹو؛ فائل

دبئی: دبئی ٹیسٹ میں  بال ٹمپرنگ پر جرمانے کے باجود جنوبی افریقا کے کھلاڑی باز نہ آئے اور آج  بھی مورنی مورکل ٹمپرنگ کرتے پکڑے گئے۔

دبئی میں جاری دوسرے ٹیسٹ میچ کے دوران آج چوتھے روز جنوبی افریقہ کے فاسٹ بولر مورنی مورکل نے گیند کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کی اور وہ اپنے ٹراؤزر کی زپ کے ذریعے ٹمپرنگ کرتے ہوئے پکڑے گئے۔ گزشتہ روز بھی جنوبی افریقہ کے بولرز فاف ڈوپلیسس اور پیسر ورنون فلینڈر بال ٹمپرنگ کرتے ہوئے پکڑے گئے تھے جس پر امپائر ڈیوڈ بون نے ڈوپلیسس پر میچ فیس کا صرف 50 فیصد جرمانہ عائد کرتے ہوئے کہاکہ ڈوپلیسس نے بال ٹیمپرینگ جان بوجھ کر نہیں کی۔

واضح رہے کہ کرکٹ قوانین کی شق 42.3 کے مطابق گیند کو گراؤنڈ پر رگڑنا، سلائی یا سطح کو تبدیل کرنا یا پھر ناجائز فائدہ اٹھانے کیلئے کسی بھی چیز کے استعمال سے اس کی حالت تبدیل کرنا ممنوع ہے، قانون کی خلاف ورزی کرنے والے بولرز پر مخصوص عرصے تک میچ کھیلنے پر پابندی اور جرمانہ عائد کیا جاتا ہے، حال ہی میں آئی سی سی  نے ٹمپرنگ کے قوانین میں تبدیلی کی جس کے مطابق ٹیمپرنگ کے بعد گیند کو تبدیل کرکے مخالف ٹیم کو 5 رنز اضافی دیئے جاتے ہیں۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔