17 فوجی قتل، ایران نے 16 باغیوں کو پھانسی دیدی

اے ایف پی  اتوار 27 اکتوبر 2013
تحقیقات کررہے ہیں کہ حملہ آور منشیات کے اسمگلرتھے یاحکومت مخالف مسلح گروپ۔حکام۔فوٹو:فائل

تحقیقات کررہے ہیں کہ حملہ آور منشیات کے اسمگلرتھے یاحکومت مخالف مسلح گروپ۔حکام۔فوٹو:فائل

تہران: پاکستان کی سرحدکے قریب مسلح افرادکے حملے میںایران کے 17بارڈر سیکیورٹی اہلکار ہلاک ہوگئے۔

ایران کے سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق سیکیورٹی اہلکاروں پرحملے کے جواب میں 16باغیوں کو پھانسی دے دی ہے۔ ایران کے سرکاری خبررساں ادارے ارنانیوز کے حوالے سے بتایاگیا ہے کہ حکام اب تحقیقات کررہے ہیں کہ حملہ آور منشیات کے اسمگلرتھے یاحکومت مخالف مسلح گروپ۔ ایرانی حکام کے مطابق یہ واقعہ جمعے اورہفتے کی درمیانی شب کو پاکستان کی سرحدسے متصل علاقے سراوآن میں پیش آیا۔ ایرانی حکام کے مطابق اس واقعے میں 5بارڈر سیکیورٹی اہلکار زخمی بھی ہوئے ہیں۔ ارنانیوز نے ایک اہلکارکے حوالے سے بتایاہے کہ رہزن یاایران مخالف باغی اس واقعے میں ملوث ہیں۔ سرکاری ذرائع ابلاغ نے ایران کے صوبے سیستان بلوچستان کے اٹارنی جنرل محمدمرضی کے حوالے سے بتایاہے کہ سرحدی محافظوں کی ہلاکت کے جواب میںحکومت مخالف گروہوں سے تعلق رکھنے والے 16باغیوں کوزاہدان کی جیل میں ہفتے کی صبح پھانسی دے دی گئی ہے۔

ان باغیوں پر بارڈرسیکیورٹی اہلکاروں پر حملوں کا الزام نہیں تھا لیکن اٹارنی جنرل کے مطابق باغیوںکا تعلق حکومت مخالف گروہوں سے تھا۔ ابھی تک اس حملے کی ذمے ذمے داری کسی نے قبول نہیں کی لیکن ماضی میںسنی شدت پسندتنظیم جنداللہ صوبہ سیستان بلوچستان میںاس نوعیت کے حملوںمیں ملوث رہی ہے۔ جنداللہ 2002 میں بلوچ اقلیت کی مفلسی کی طرف توجہ دلانے کے لیے قائم کی گئی تھی۔ افغانستان سے یورپ منشیات اسمگل کرنے کے لیے ایران ایک اہم راستہ ہے۔ گزشتہ 30سال کے دوران اسمگلروںسے ہونے والی جھڑپوںمیں 4ہزار پولیس اہلکارہلاک ہوچکے ہیں۔ نائب وزیرداخلہ علی عبداللٰہی کے مطابق 3اہلکار اغوا کرکے سرحدپار پاکستان لے جائے گئے ہیں۔

ایران ان کی بحفاظت واپسی کے اقدام کررہاہے۔ انھوںنے کہاکہ دہشت گردوں کو انتباہ کیاجا چکاہے کہ ان کی ہر کارروائی کا منہ توڑ جواب دیاجائے گا۔ اس سلسلے میں پاکستان حکومت سے بھی کہاگیا ہے کہ سرحدی معاملات کے حوالے سے سنجیدہ اقدام کرے۔ فارس ایجنسی کے مطابق اٹارنی جنرل نے کہاہے کہ اسی واقعے کے بدلے میںایران نے جیل میں قید 16قیدیوں کو پھانسی دی۔ دوسری طرف ایرانی فورسزنے بارڈرکراس کرنے والے 2پاکستانیوں کوہلاک جبکہ 3کو زخمی کردیا۔ باخبرذرائع کے مطابق پاک ایران بارڈر وشاب کے راستے پاکستانی باشندے بغیردستاویزات کے ایران جارہے تھے کہ ایرانی فورسزنے فائرنگ کردی۔ محمد ابراہیم ولدمحمد سلیم وشاب اورمحمد سلیم ولدمراد موقع پر جاںبحق ہوگئے۔ عبیداللہ، شمس الحق اور بدر الدین نامی افراد شدیدزخمی ہوئے۔ ایرانی فورسزنے ہلاک ہونے والوں کی لاشیںقبضے میںلے لیں اور زخمیوںکو پاکستانی حدودمیں لایاگیا۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔