ناقص قیادت آسٹریلیا میں پاکستان کی وجہ شکست بنی، چیپل

اسپورٹس ڈیسک  پير 9 دسمبر 2019
اظہر نے خراب فیلڈ سیٹنگ سے نوجوان پیس اٹیک کے حوصلے پست کیے، سابق کرکٹر
فوٹو: فائل

اظہر نے خراب فیلڈ سیٹنگ سے نوجوان پیس اٹیک کے حوصلے پست کیے، سابق کرکٹر فوٹو: فائل

سڈنی: سابق آسٹریلوی کپتان ای ین چیپل نے اپنے ملک میں پاکستان کی حالیہ شکست کا ذمہ دار ناقص کپتانی کو قرار دے دیا، وہ کہتے ہیں کہ اظہر علی کی خراب فیلڈ سیٹنگ نے اپنے ہی نوجوان پیس اٹیک کے حوصلے پست کیے۔

وہ مصباح الحق کے سابق ٹورکی ہی نقالی کرتے ہوئے دکھائی دیے، اس دورے کیلیے مصباح کو کوچ بنانے سے مشکلات میں اضافہ ہی ہوا۔ ان خیالات کا اظہار انھوں نے ویب سائٹ ’کرک انفو‘ کیلیے اپنے کالم میں کیا۔ چیپل کا کہنا تھا کہ پاکستان کی حالیہ ٹور کیلیے تیاری مناسب تھی، پرتھ کی باؤنسی وکٹوں پر کھلاڑیوں نے اچھی پریکٹس بھی کی، شاٹ پچ بولنگ کا بھی سامنا کیا مگر وہ ایک اہم جزو کپتانی کو فراموش کربیٹھے، پاکستان کی گذشتہ 3 آسٹریلوی ٹورز میں کپتانی انتہائی مایوس کن رہی ہے۔

وہ ایک بار بھی پہلی اننگز میں آسٹریلوی ٹیم کومناسب اسکور پر آؤٹ نہیں کرپائے اور جب 2010 کے سڈنی ٹیسٹ میں ایسا ہوا بھی تو تب کے کپتان محمد یوسف نے اپنی خراب کپتانی سے جیتی ہوئی بازی ہار دی، مسائل میں مزید اضافہ مصباح الحق کے اس ٹورکیلیے کوچ مقرر کرنے پر ہوا جوکہ 2016-17 کے ٹور میں پاکستان ٹیم کے کپتان تھے۔

حالیہ ٹور کے کپتان اظہر علی نے فیلڈ سیٹنگ میں انھیں ہی نقل کیا، ان کی ناقص فیلڈ سیٹنگ کی وجہ سے ہی پاکستان کے نوجوان فاسٹ بولرز کے حوصلے پست ہوئے اور وہ زیادہ اچھی کارکردگی نہیں دکھاسکے، پاکستان کی آسٹریلیا میں مسلسل ناکامیاں دوسری ٹیموں کیلیے سبق ہیں کہ وہ یہاں آنے سے قبل کپتانی جیسی اہم چیز کو نظر انداز نہ کریں۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔