رواں مالی سال میں کپاس کی پیداوارمیں 19 فیصد کمی کا امکان ہے، آغا شہاب

اسٹاف رپورٹر  ہفتہ 14 دسمبر 2019
کپاس کی ممکنہ قلت کی وجہ سے ٹیکسٹائل سیکٹر کی کارکردگی بری طرح متاثر ہوگی۔ فوٹو: اے پی پی

کپاس کی ممکنہ قلت کی وجہ سے ٹیکسٹائل سیکٹر کی کارکردگی بری طرح متاثر ہوگی۔ فوٹو: اے پی پی

کراچی:  کراچی چیمبر آف کامرس کے صدر آغا شہاب احمد خان نے امریکی فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن ودیگرآزاد اندازوں کو مدنظر رکھتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان میں رواں مالی سال میں کپاس کی پیداوار میں 19 فیصد کمی کا امکان ہے۔

مالی سال 2020 کے دوران کپاس کی پیداوار تقریباً 8 ملین گانٹھوں تک محدود رہنے کی وجہ سے ٹیکسٹائل شعبے کی برآمدات پر برے اثرات مرتب ہوں گے کیونکہ کپاس اس سیکٹر کا اہم خام مال ہے۔

انھوں نے کہاکہ مالی سال 2018میں کپاس کی گانٹھوں کی پیداوار 11.946 ملین رہی جو مالی سال 2019 میں 17.5 فیصد کم ہو کر 9.861 ملین گانٹھوں تک رہ گئی اور مالی سال 2020 میں تقریباً 19 فیصد کمی کے خدشات ہیں لہٰذا کپاس کی ممکنہ قلت کی وجہ سے ٹیکسٹائل سیکٹر کی کارکردگی بری طرح متاثر ہوگی۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔