مجھے دل سے نہ بھلانا۔۔۔۔ لیجنڈ گلوکارہ مہناز کی آج 7 ویں برسی

اسٹاف رپورٹر  اتوار 19 جنوری 2020
مہناز نے سن 1972ء میں باقاعدہ طور پر فن موسیقی میں قدم رکھا،  ٹیلی وژن پر گائیکی کے بعد ان کی شہرت فلم اسکرین تک جاپہنچی (فوٹو : فائل)

مہناز نے سن 1972ء میں باقاعدہ طور پر فن موسیقی میں قدم رکھا، ٹیلی وژن پر گائیکی کے بعد ان کی شہرت فلم اسکرین تک جاپہنچی (فوٹو : فائل)

 کراچی: لیجنڈ گلوکارہ مہناز کی 7 ویں برسی آج منائی جارہی ہے۔

چار دہائیوں تک آواز کا جادو جگانے والی گلوکارہ مہناز بیگم سن 1955ء میں کراچی میں پیدا ہوئیں۔ مہناز کا اصل نام کنیز رضا تھا وہ برصغیر کی معروف مغنیہ اور سوز خواں کجن بیگم کی صاحب زادی تھیں اسی لیے انھیں بچپن ہی سے گلوکاری سے لگاؤ پیدا ہوگیا تھا۔

مہناز نے سرسید گرلز کالج سے بی اے کیا،سن 1972ء میں باقاعدہ طور پر فن موسیقی میں قدم رکھا،  ٹیلی وژن پر گائیکی کے بعد ان کی شہرت فلم اسکرین تک جاپہنچی۔ مہناز نے آنے والے برسوں میں ریڈیو، ٹی وی اور فلم میں اپنی مسحورکن آواز سے لاتعداد گیتوں کو پہچان دی۔

مہناز نے مجموعی طور پر 1500 سے زائد گانے ریکارڈ کروائے، مہناز اس حوالے سے بھی خوش قسمت تھی کہ ا بتداء میں ہی انھیں معروف موسیقار نثار بزمی، روبن گھوش،سہیل رانا، وجاہت عطرے سمیت دیگر نامور موسیقاروں کے ساتھ کام کرنے کا موقع ملا۔

باصلاحیت مغنیہ مہناز بیگم طویل عرصے سے علیل تھیں انتقال سے دوماہ قبل تک وہ کراچی میں مقیم رہیں۔انھوں نے 19 جنوری 2013ء کو امریکا کا رخت سفر باندھا تاہم دوران پرواز راستے میں ہی ان کی حالت بگڑگئی انھیں بحرین کے ایک اسپتال منتقل کیا گیا جہاں وہ اپنے سیکڑوں مداحوں کو سوگوار چھوڑ کر خالق حقیقی سے جاملی تھیں۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔