عمان کے نئے سلطان کا اپنے لیے ’اعلیٰ حضرت‘ سمیت تمام القاب منسوخ کرنے کا حکم

ویب ڈیسک  منگل 28 جنوری 2020
مجھے اعلیٰ حضرت، مولانا یا سلطان معظم کے القاب سے نہ پکارا جائے، سلطان عمان فوٹو : فائل

مجھے اعلیٰ حضرت، مولانا یا سلطان معظم کے القاب سے نہ پکارا جائے، سلطان عمان فوٹو : فائل

مسقط: سلطنت عمان کے نئے فرمانروا سلطان ھیثم بن طارق نے اپنے لیے مخصوص تمام سرکاری القاب کو منسوخ کرکے صرف سلطانِ عمان کے نام سے ہی پکارے جانے کا حکم جاری کیا ہے۔

عرب میڈیا کے مطابق سلطنت عمان کے نئے سلطان ھیثم بن طارق نے اپنے پہلے حکم نامے کے ذریعے اپنے لیے مخصوص شاہی القاب اور خطاب منسوخ کرنے کا حکم دیا ہے۔ اس حکم کی تعمیل میں اب سرکاری اور نجی خط و کتابت میں بھی فرمانروا سلطان ھیثم بن طارق کو ’السلطان المعظم‘ ’مولانا، یا ’اعلیٰ حضرت‘ کہہ کر مخاطب نہیں کیا جائے گا۔

نئے سلطان عمان نے یہ بھی ہدایت کی اب انہیں صرف ’سلطانِ عمان‘ لکھا، پڑھا اور بولا جائے۔ ستائش ، تعریف اور مداح سرائی کی ضرورت نہیں۔ یہ سب غیر ضروری ہے اس لیے صرف سرکاری عہدے سلطان عمان کہنے پر ہی اکتفا کیا جائے گا۔

Amman

سلطان عمان نے یہ حکم نامہ اپنے وزراء اور مشیران کے لیے لکھا جس کے بعد سلطان کے حکم کو عام کردیا گیا اور میڈیا کو بھی سلطان ھیثم بن طارق کا تذکرہ کرتے ہوئے القابات سے پرہیز کرنے کا کہا گیا ہے۔

واضح رہے کہ سلطان ھیثم بن طارق رواں برس 11 جنوری کو سلطان قابوس بن سعید کی وفات پر جانشین بنائے گئے تھے وہ سلطان قابوس کے چچا زاد بھائی بھی ہیں۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔