روشنی کے ذریعے منہ کو جراثیم سے پاک کرنے والا گھریلو ماؤتھ واش

ویب ڈیسک  پير 17 فروری 2020
یہ نیا ماؤتھ واش روشنی کی مدد سے منہ میں موجود مضر جراثیم کو ہلاک کردیتا ہے لیکن مفید بیکٹیریا کو کوئی نقصان نہیں پہنچاتا (فوٹو: آلٹو یونیورسٹی)

یہ نیا ماؤتھ واش روشنی کی مدد سے منہ میں موجود مضر جراثیم کو ہلاک کردیتا ہے لیکن مفید بیکٹیریا کو کوئی نقصان نہیں پہنچاتا (فوٹو: آلٹو یونیورسٹی)

ہیلسنکی، فن لینڈ: فن لینڈ کے سائنس دانوں نے ایک ایسا نیا ماؤتھ واش ایجاد کرلیا ہے جو روشنی کی مدد سے منہ میں موجود 99 فیصد مضر جراثیم کو ہلاک کردیتا ہے جبکہ منہ کے مفید بیکٹیریا کو اس سے کوئی نقصان نہیں پہنچتا۔

اگر دانت روزانہ ٹھیک سے صاف نہ کیے جائیں تو یہ کھوکھلے ہو کر کمزور پڑجاتے ہیں جبکہ دانتوں میں کیڑا لگنے کے علاوہ مسوڑھوں میں سوجن اور جلن کی شکایات بھی بڑھ جاتی ہیں؛ اور صحیح معنوں میں کھانا پینا تک حرام ہوجاتا ہے۔

اکثر لوگ یہ بات بخوبی جانتے ہیں لیکن پھر بھی دانتوں کی صفائی پر سنجیدگی سے بہت کم توجہ دیتے ہیں جس کی وجہ سے جلد یا بدیر وہ دانتوں، مسوڑھوں اور منہ کی مختلف بیماریوں کا شکار ہوجاتے ہیں۔ البتہ اس حوالے سے نیا ماؤتھ واش بہت کارآمد ہوسکتا ہے۔

اس ماؤتھ واش میں ایک خاص قسم کا مرکب (کمپاؤنڈ) شامل ہے جو روشنی جذب کرکے سرگرم ہوتا ہے اور مضر جراثیم کا خاتمہ شروع کردیتا ہے۔ یہ ایک گولی کی شکل میں ہوتا ہے جو منہ میں رکھتے ہی گھل جاتی ہے اور اگلے 30 سیکنڈ میں ماؤتھ واش، اپنے جراثیم کش مرکب سمیت، دانتوں اور مسوڑھوں سے چپک جاتا ہے۔

اگلے مرحلے میں باکسنگ کے دوران جبڑوں میں دبائے جانے والے سخت فوم جیسا ایک خصوصی ’’لیمپ‘‘ منہ میں رکھا جاتا ہے جسے روشن کرنے کے لیے یو ایس بی سے بجلی فراہم کی جاتی ہے۔

ایل ای ڈیز سے لیس، اس لیمپ سے سرخ اور نیلی روشنیاں خارج ہوتی ہیں۔ سرخ روشنی اس جراثیم کش مادّے میں کیمیکل ری ایکشن شروع کرواتی ہے جبکہ نیلی روشنی اس عمل کو بہتر بناتی ہے۔ اس طرح سے صرف 10 منٹ میں دانتوں سے مضر جراثیم کا 99 فیصد خاتمہ ہوجاتا ہے۔

ابتدائی آزمائشوں کے دوران معلوم ہوا کہ نیا ماؤتھ واش ایسے سخت جان بیکٹیریا کو بھی ہلاک کردیتا ہے جو اینٹی بایوٹکس سے بھی ختم نہیں ہوتے، جبکہ ان میں ماؤتھ واش والے مرکب کے خلاف مزاحمت بھی پیدا نہیں ہوتی۔ علاوہ ازیں، یہ بھی ثابت ہوا ہے کہ اس پوری کارروائی کے دوران منہ میں پائے جانے والے مفید جرثومے (بیکٹیریا) محفوظ رہتے ہیں اور انہیں کوئی نقصان نہیں پہنچتا۔

نیا ماؤتھ واش آلٹو یونیورسٹی اور ہیلسنکی یونیورسٹی کے سائنسدانوں کا مشترکہ کارنامہ ہے جسے مارکیٹ میں فروخت کرنے کےلیے ’’کیوٹے ہیلتھ‘‘ کے نام سے ایک نجی کمپنی بھی بنائی جاچکی ہے۔

واضح رہے کہ دانتوں کی سرجری/ آپریشن کے دوران روشنی سے جراثیم ہلاک کرنے کا طریقہ برسوں سے رائج ہے لیکن یہ پہلا موقع ہے کہ اس سے ملتی جلتی تدبیر کو گھروں میں عام استعمال کے لیے پیش کیا جارہا ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔