نابینا افراد کیلئے سلائی مشین بنانیوالی پاکستانی طالبہ نے عالمی ایوارڈ جیت لیا

ویب ڈیسک  جمعرات 27 فروری 2020
پاکستانی انڈسٹریل ڈیزائننگ کی طالبہ اقصیٰ اجمل نے بصارت کی خرابی میں مبتلا افراد کے لیے جدید سلائی مشین ڈیزائن کی

پاکستانی انڈسٹریل ڈیزائننگ کی طالبہ اقصیٰ اجمل نے بصارت کی خرابی میں مبتلا افراد کے لیے جدید سلائی مشین ڈیزائن کی

میلان: پاکستانی طالبہ اقصیٰ اجمل نے بصارت کی خرابی میں مبتلا افراد کے لیے جدید سلائی مشین ڈیزائن کرنے پر لیکسس ڈیزائن ایوارڈ 2020 اپنے نام کرلیا۔

پاکستانی انڈسٹریل ڈیزائننگ کی طالبہ اقصیٰ اجمل نے بصارت کی خرابی میں مبتلا افراد کے لیے ایک جدید سلائی مشین ڈیزائن کی جسے لیکسس ڈیزائن ایوارڈ 2020 کے حتمی 6 فائنلسٹ میں شامل کیاگیا۔ بعدازاں اقصیٰ اجمل نے اٹلی کے شہر میلان میں ہونے والی تقریب میں لیکسس ڈیزائن ایوارڈ اپنے نام کرلیا۔

اقصیٰ نیشنل یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی (نسٹ) کی طالبہ ہیں اور انہوں نے ’پرس وِٹ‘ نامی سلائی مشین تیار کی ہے جس کی بدولت متاثرہ بصارت کے حامل خواتین و حضرات سلائی کرکے اپنے روزگار میں اضافہ کرسکتے ہیں۔

اقصیٰ کی ڈیزائن کردہ سلائی مشین استعمال میں آسان ہے اور اس میں وہ تمام خواص شامل ہیں جن کی بنا پر غریب اور متاثرہ افراد کسی رکاوٹ کے بغیر کام کرسکتے ہیں۔

اقصیٰ کا اپنی سلائی مشین کے حوالے سے کہنا تھا کہ ان کی سہیلی اور پڑوسی ایک الم ناک حادثے میں نابینا ہوگئی تھی جس سے اس کی پڑھائی کا سلسلہ موقوف ہوگیا تھا۔ پاکستان میں بریل سے تعلیم دینے والے نظام بہت مہنگے ہیں جس پر انہوں نے اپنی دوست اور اس جیسے لاتعداد افراد کے بارے میں سوچنا شروع کیا اور یہ ڈیزائن بنایا۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔