بھارتی ناظم الامور کی دفتر خارجہ طلبی، جنگ بندی کی خلاف ورزیوں پر شدید احتجاج

ویب ڈیسک  بدھ 1 جولائ 2020
بھارت کی بے گناہ شہریوں پر فائرنگ دوطرفہ معاہدے اور بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی ہے، دفتر خارجہ فوٹو : فائل

بھارت کی بے گناہ شہریوں پر فائرنگ دوطرفہ معاہدے اور بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی ہے، دفتر خارجہ فوٹو : فائل

 اسلام آباد: کنٹرول لائن پر بھارت کی جانب سے جنگ بندی کی خلاف ورزیوں پر پاکستان نے بھارتی ناظم الامور کو دفتر خارجہ طلب کرکے شدید احتجاج کیا۔

بھارتی ناظم الامور گوراو اہلووالیا کو دفتر خارجہ طلب کرکے 29 اور 30 جون کو لائن آف کنٹرول پر بھارتی قابض فوج کی جنگ بندی کی خلاف ورزیوں، بلا اشتعال فائرنگ کے نتیجے میں بے گناہ شہری کی شہادت اور 5 افراد کے زخمی ہونے پر پاکستان کی طرف سے شدید احتجاج کیاگیا۔

اس خبر کو بھی پڑھیں : بھارتی فوج کی کنٹرول لائن پر گولہ باری سے شہری شہید، پاک فوج کا بھرپور جواب

ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق بھارتی ناظم الامور گوراو اہلووالیا کو احتجاجی مراسلہ دیا گیا جس میں کہا گیا ہے کہ بھارت کی بے گناہ شہریوں پر فائرنگ دوطرفہ معاہدے اور بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی ہے، بھارت 2003 کے سیز فائر معاہدے کی پاسداری اور خلاف ورزی کے واقعات کی تحقیقات کرے، بھارت سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق اقوام متحدہ کے مبصرین کو کام کرنے دے۔

واضح رہے کہ رواں سال بھارت نے جنگ بندی کی 1546 خلاف ورزیوں کا ارتکاب کیا جس کے نتیجے میں 14 بے گناہ شہری شہید اور 114 زخمی ہوگئے۔

 

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔