اسلام آباد میں نیا مندر بنانا اسلام کی روح کیخلاف ہے، پرویز الٰہی

نمائندہ ایکسپریس  جمعرات 2 جولائ 2020
ہم اقلیتوں کے حقوق کیساتھ،پہلے سے موجود مندروں کی مرمت کیجائے،میں نے اپنے دور میں کٹاس راج مندر کی مرمت کروائی، پرویز الٰہی۔ فوٹو: فائل

ہم اقلیتوں کے حقوق کیساتھ،پہلے سے موجود مندروں کی مرمت کیجائے،میں نے اپنے دور میں کٹاس راج مندر کی مرمت کروائی، پرویز الٰہی۔ فوٹو: فائل

لاہور: اسپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویزالٰہی نے کہا کہ دارالحکومت اسلام آباد میں نیا مندر بنانا نہ صرف اسلام کی روح کیخلاف ہے بلکہ یہ ریاست مدینہ کی بھی توہین ہے۔

چوہدری پرویزالٰہی نے کہا کہ پاکستان جو اسلام کے نام پر وجود میں آیا تھا، اس کے دارالحکومت اسلام آباد میں نیا مندر بنانا نہ صرف اسلام کی روح کیخلاف ہے بلکہ یہ ریاست مدینہ کی بھی توہین ہے، فتح مکہ کے موقع پر خاتم النبیین حضرت محمد رسول اللہ ؐ  نے حضرت سیدنا علی المرتضیٰ رضی اللہ عنہ کیساتھ بیت اللہ شریف میں موجود 360 بتوں کو توڑا تھا اور ساتھ ہی یہ بھی فرمایا تھا کہ ’’حق آیا اور باطل مٹ گیا بیشک باطل مٹنے ہی والا تھا ‘‘۔

پرویزالٰہی نے کہا کہ ہم اقلیتوں کے حقوق کیساتھ ہیں ، پہلے سے موجود مندروں کی مرمت کی جائے ، میں نے اپنے دور میں کٹاس راج مندر کی مرمت کروائی تھی ، اپنے دور میں پہلی دفعہ پاکستان میں بجٹ میں چرچز کی مرمت کیلئے پیسے رکھے تھے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔