رابی پیرزادہ نے پاکستان چھوڑنے کی تردید کردی

ویب ڈیسک  جمعـء 10 جولائ 2020
 پاکستان میں بھی اچھے لوگ موجود ہیں اور صرف کچھ اچھے لوگوں کی وجہ سے یہ ملک قائم  ہے، رابی پیرزادہ فوٹوفائل

پاکستان میں بھی اچھے لوگ موجود ہیں اور صرف کچھ اچھے لوگوں کی وجہ سے یہ ملک قائم ہے، رابی پیرزادہ فوٹوفائل

کراچی: سابق گلوکارہ رابی پیرزادہ نے پاکستان چھوڑنے کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان میرا دل اور جان ہے میں کبھی اپنا وطن چھوڑ کر گئی بھی تو مکہ جاؤں گی۔

گزشتہ روز رابی پیرزادہ نے انسٹاگرام پوسٹ میں نہایت غصے میں کہا تھا کہ وہ جلد ہی پاکستان چھوڑ دیں گی۔ ان کی اس پوسٹ کی وجہ بھارتی گلوکار عدنان سمیع  کی وہ ٹوئٹ تھی جس میں عدنان سمیع نے رابی پیرزادہ کی پینٹنگز کو سراہتے ہوئے ان کی تعریف کی تھی۔

یہ بھی پڑھیں: ’میرا جسم  میرے اللہ کی مرضی‘، رابی پیرزادہ

عدنان سمیع کی تعریف کرنے پر رابی پیرزادہ نے ایک جذباتی ٹوئٹ کی جس میں انہوں نے لکھا کہ دراصل لوگوں کے پاکستان چھوڑ کر جانے کے پیچھے وجہ ہے آج مجھے تصدیق کرنے دیں کہ بھارتی ہم  سے بہتر ہیں۔ انہوں نے کبھی مجھ پر طنز نہیں کیا۔ رابی پیرزادہ نے عدنان سمیع کو مخاطب کرتے ہوئےکہا کہ میں نے آپ کے بارے میں ماضی میں جو کچھ کہا اس پر معافی چاہتی ہوں یہ قوم صلاحیتوں کی حقدار نہیں نہ آپ کی آواز کی اور نہ میری پینٹنگز کی۔ میں بھی پاکستان چھوڑ دوں گی۔ تاہم اب یہ ٹوئٹ ان کے اکاؤنٹ پر موجود نہیں ہے۔

رابی پیرزادہ نے انسٹاگرام پر بھی کافی لمبی چوڑی پوسٹ کرتے ہوئے پاکستانی اور بھارتی عوام کا موازنہ کرتے ہوئے کہا تھا کہ بھارتیوں نے کبھی  ایسا مواد شیئر نہیں کیا جس سے مجھے تکلیف ہو جب کہ میری لیک ویڈیوز مسلسل پاکستان میں شیئرز ہوتی رہیں۔

یہ بھی پڑھیں: رابی پیرزادہ نے ’’کورونا وائرس‘‘ کا علاج بتادیا

رابی پیرزادہ نے مزید لکھا میں نے ایک دن عدنان سمیع کو بہت سخت ٹویٹ کی تھی پاکستان چھوڑنے پر۔ آج احساس ہوا کہ جمائمہ سے لیکر ہر وہ شخص جو ہم سے بھاگتا تھا ٹھیک تھا، میں نے ہندوستان کے خلاف کشمیر کےلئے جنگ کی، مگر کسی ہندو نے مجھے میری تصویروں اور ویڈیو کا طعنہ نہیں دیا۔ رابی پیرزادہ نے کہا ہر وہ شخص جو قابل ہے پاکستان سے بھاگ کر اپنی پہچان بناتا ہے، میں بھی چلی جاؤں گی۔

View this post on Instagram

Indians are better than Pakistani in ethics . They never taunted me or uploaded something which gives me pain, my videos were repeatedly uploaded and shared by Muslims only in Pakistan. And i have a full right to complain my Allah about this ummat. میں نے ایک دن عدنان سمعی کو بہت سخت ٹویٹ کی تھی پاکستان چھوڑنے پر۔ آج احساس ہوا کہ جمائمہ سے لیکر ہر وہ شخص جو ہم سے بھاگتا تھا ٹھیک تھا، میں نے ہندوستان کے خلاف کشمیر کےلئے جنگ کی، مگر کسی ہندو نے مجھے میری تصویروں اور وڈیو کا طعنہ نہیں دیا۔ میرے دین کی عزت کی، جبکہ کچھ نام نہاد فرقہ پسند اور اسلام کے دشمنوں نے ہر لمحہ گندی باتیں کیں، میری وڈیو صرف پاکستان میں بار بار اپلوڈ ہوتی رہئں، مسلمانوں کے نمبرز سے، میری وڈیو چوری کرنے والا اور والی بھی مسلمان تھے۔ مولانا طارق جمیل نے ٹھیک آئینہ دکھا یا سب کو ۔ ہم اتنے گندے اور گرے ہوئے لوگ ہیں کہ آج ہم کافروں سے بدتر ہیں۔ ایک اور فتوا پھر لگا دیں۔ میری جوتی بھی آپ سے نہیں ڈرتی۔ دنیا کی سب سے گھٹیا اور گری ہوئ قوم ہم ہیں۔ منافق جھوٹے اور ایک دوسرے کا خون پینے والے۔ اللہ کا عزاب اسی وقت آجانا تھا جب مسلمانوں نے بچوں کو ریپ کرکے مارنا شروع کیا۔ کسی کی توبہ اور دین کے راستے کا مذاق بنایا۔ہر وہ شخص جو قابل ہے پاکستان سے بھاگ کر اپنی پہچان بناتا ہے، میں بھی چلی جائوں گی۔ آپ لوگ رمضان ٹرانمشن اور ڈراموں سے دین سیکھنا اور اپنے بچوں کو سکھانا۔

A post shared by Rabi Pirzada (@rabi.fairy) on

بعد ازاں سوشل میڈیا پر تنقید کا سامنا کرنے کے بعد رابی پیرزادہ نے پاکستان چھوڑنے کا فیصلہ واپس لیتے ہوئے کہا کہ میں نے اپنی پوسٹ ڈیلیٹ کردی پاکستان میں بھی اچھے لوگ موجود ہیں اور صرف کچھ اچھے لوگوں کی وجہ سے یہ ملک قائم ہے میں اپنے الفاظ واپس لیتی ہوں۔

یہ بھی پڑھیں: عمرے کی ادائیگی نے میری زندگی بدل دی، رابی پیرزادہ

رابی پیرزادہ نے کہا پاکستان میرا دل اور جان ہے اور آپ لوگ میرے اپنے ہیں۔ میں اپنا وطن کبھی چھوڑ کر گئی تو مکہ جاؤں گی۔  وہ چینل اور سوشل میڈیا جو پاکستان کا آرٹ پروموٹ نہیں کرتا پھر سے ایک بار منفی خبروں میں سب سے آگے تھا،پوسٹ کے کچھ لمحات بعد میں نے تردید کردی کیا کسی نے اس کے بارے میں بات کی۔

واضح رہے کہ ماضی میں گلوکاری کے شعبے سے وابستہ رابی پیرزادہ نے ویڈیو اسکینڈل کے بعد موسیقی کو خیرباد کہتے ہوئے اپنی باقی زندگی دین کا پیغام عام کرنے کے لیے وقف کرنے کااعلان کیا تھا۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔